بدھ , 21 اگست 2019

اسرائیل کا شام میں ایرانی اہداف کو نشانہ

اسرائیلی فوج کا کہنا ہے کہ اس نے شام میں ایرانی اہداف کو نشانہ بنانا شروع کر دیا ہے۔

اسرائیل کی دفاعی افواج (آئی ڈی ایف) کا کہنا ہے کہ اس کا آپریشن قدس فورس کے خلاف ہے جو کہ ایرانی پاسدران انقلاب کا ایک یونٹ ہے۔

اسرائیل نے اس حوالے سے مزید تفصیلات فراہم نہیں کی ہیں تاہم شام کے دارالحکومت دمشق کے ارد گرد پیر کی صبح حملوں کی اطلاعات ہیں۔

دوسری جانب شام کی سرکاری نیوز ایجنسی صنعا کا کہنا ہے کہ ملک کے فضائی دفاع نے جنوب میں ’اسرائیل کے ایک فضائی حملے‘ کو پسپا کر دیا ہے۔

آئی ڈی ایف نے اتوار کو ایک بیان میں کہا ہے کہ اس نے گولان کی پہاڑیوں پر داغے جانے والے ایک راکٹ کو راستے میں روک لیا۔

آئی ڈی ایف نے پیر کی صبح ایک ٹویٹ میں اپنا آپریشن شروع کرنے کا اعلان کیا۔


برطانیہ میں قائم انسانی حقوق کی تنظیم سیریئن آبزرویٹری فار ہیومن رائٹس (ایس او ایچ آر) نے کہا ہے کہ اسرائیلی راکٹ شام کے دارالحکومت دمشق کے ’اطراف کو نشانہ‘ بنا رہے ہیں۔

دمشق میں موجود عینی شاہدین نے اتوار کی رات بلند دھماکے سنے جانے کے بارے میں بات کی ہے۔

ان دھماکوں کے نیتجے میں ہونے والے نقصانات کے بارے میں کچھ واضح نہیں ہے، البتہ شام میں نیوز ایجنسیز کا کہنا ہے کچھ افراد جاں بحق ہوئے ہیں۔

یہ آپریشن اسرائیل کی جانب سے کیے جانے والے اس دعوے جس میں کہا گیا ہے ’ گولان کی پہاڑیوں پر داغے جانے والے راکٹ کو ڈوم ایئر ڈیفینس سسٹم کے ذریعے راستے میں روک لیا گیا‘ کے بعد شروع کیا گیا ہے۔

دوسری جانب اسرائیل کے وزیراعظم بنیامین نتن یاہو نے اتوار کو چاڈ کے دورے کے دوران تنبیہ جاری کی ہے۔

انھوں نے کہا ’ہم نے شام میں ایرانی مورچہ بندی کو نشانہ بنانے اور جو ہمیں نقصان پہنچانے کی کوشش کرے گا اسے نقصان پہنچانے کی پالیسی بنائی ہے۔‘

خیال رہے کہ اسرائیل شام کے اندر اہداف کو نشانہ بنانے کو شاذو نادر ہی تسلیم کرتا ہے۔

یہ بھی دیکھیں

امریکہ کو سلامتی کونسل کی قرار داد بائیس اکتیس کے تحت اپنے وعدوں پر عمل کرنا چاہیے،ایران

تہران (مانیٹرنگ ڈیسک)ایران کے وزیر خارجہ ڈاکٹر محمد جواد ظریف نے ایک بار پھر کہا …