بدھ , 14 اپریل 2021

مصنوعات پرپابندی، اماراتی حکام کی عالمی ادارے کو قطر کے خلاف درخواست

ابو ظبی(مانیٹرنگ ڈیسک) متحدہ عرب امارات نے قطر میں مصر اور خلیجی ممالک کی تیار کردہ مصنوعات کی فروخت پر پابندی کے خلاف ورلڈ ٹریڈ آرگنائزیشن میں درخواست دائر کردی۔تفصیلات کے مطابق قطری وزارت اقتصادیات کی جانب سے ملک میں بحرین، سعودی عرب، مصر، اور متحدہ عرب امارات میں تیار کی جانے والی ادویات اور دیگر اشیاء کی فروخت پر پابندی عائد کی گئی ہے، جس کے خلاف اماراتی حکومت نے ڈبلیو ٹی او میں درخواست جمع کرائی ہے۔

اماراتی حکام کی جانب سے درخواست میں کہا گیا ہے کہ قطر نے انفرااسٹرکچر کے منصوبوں میں کام کرنےوالی منظور شدہ کمپنیوں کے نام بھی فہرست سے خارج کردئیے ہیں کیوں کہ ان کا تعلق متحدہ عرب امارات سے ہے۔

اماراتی خبر رساں ادارے کا کہنا ہے کہ ورلڈ ٹریڈ آرگنائزیشن کے قوانین کے مطابق کسی بھی ملک کو خود کسی بھی ملک کی مصنوعات پر پابندی عائد کرنے کا اختیار نہیں جب تک ڈبلیو ٹی او کی سیٹلمنٹ کمیٹی فیصلہ نہ دے، قطر نے ڈبلیو ٹی او کی اجازت کے بغیر اماراتی مصنوعات پر پابندی عائد کرکے عالمی تجارتی قوانین کی خلاف ورزی کی ہے۔

متحدہ عرب امارات نے درخواست کے متن میں تحریر کیا کہ ’اماراتی حکومت ڈبلیو ٹی او قانون کے مطابق اپنے مفادات کےلیے کوئی قدم اٹھا سکتی ہے‘۔غیر ملکی میڈیا کا کہنا ہے کہ قطر نے متحدہ عرب امارات، سعودی عرب،مصر اور بحرین درآمد کی جانے والی مصنوعات پر مئی 2018ء میں پابندی عائد کی تھی۔

یاد رہے کہ قطر نے متحدہ عرب امارات، سعودی عرب، مصر اور بحرین سے آنے والی تمام مصنوعات پر مئی 2018 میں پابندی عائد کی تھی۔خیال رہے کہ متحدہ عرب امارات، سعودی عرب، بحرین اور مصر نے سنہ 2007 میں قطر پر دہشت گردی کی حمایت اور دہشت گردوں تنظیموں کی معاونت کا الزام لگاکر سفارتی و تجارتی تعلقات منقطع کردئیے تھے۔

یہ بھی دیکھیں

میزائل تجربے پر تنقید : شمالی کوریا نے اقوام متحدہ پر چڑھائی کردی

شمالی کوریا نے میزائل ٹیسٹ کے بعد پابندیوں کی تجویز پر اقوام متحدہ پر چڑھائی …