جمعرات , 18 جولائی 2019

اسرائیلی ایٹمی پروگرام سے وابستہ 320 ملازمین کینسر میں مبتلا

یروشلم (مانیٹرنگ ڈیسک)اسرائیل کے عبرانی ذرائع ابلاغ نے انکشاف کیا ہے کہ جنوبی فلسطین کے جزیرہ نما النقب میں قائم اسرائیل کے ‘دیمونا’ ایٹمی پلانٹ میں کام کرنے والے درجنوں سائنسدان اور ملازمین کینسر کے مرض کا شکار ہونے کے بعد عدالت جا پہنچے ہیں۔

اسرائیل کے سرکاری ریڈیو کی رپورٹ کے مطابق دیمونا ایٹمی پلانٹ میں کام کرنے والے 320 سینیر ملازمین اور سائنسدان کینسر کا شکار ہونے کے بعد اپنے حقوق اور علاج کے لیے عدالتوں میں جا پہنچے ہیں۔

ریڈیو رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ عدالتوں میں اب تک ایسے صرف 20 کیسزپر بحث کی ہے۔ ستمبر 2017ء کو اسرائیلی حکومت نے ‘زوھار’ نامی ایک کمیٹی تشکیل دی تھی جس کے ذمہ ایٹمی پروگرام سے وابستہ صہیونیوں کے کینسر میں مبتلا ہونے کی تحقیقات کرنا اور ان کی شکایات کا ازالہ کرنا تھا۔ریڈیو رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ گذشتہ 40 سال سے ایٹمی پروگرام سے منسلک ایسے درجنوں مرد اور خواتین کو کینسر لاحق ہوچکا ہے۔

یہ بھی دیکھیں

ایران نےامریکا کیساتھ بات چیت کا امکان مسترد کردیا

اقوام متحدہ میں ایرانی ترجمان علی رضا میر یوسفی کا کہنا ہے کہ  امریکا کیساتھ …