جمعہ , 26 اپریل 2019

پیدائشی طور پر دل میں سوراخ قابل علاج ہے، ماہرین طب

کراچی(مانیٹرنگ ڈیسک) پیڈیاٹرک کنجینیٹیل ہارٹ ڈیزیز (پیدائشی طورپردل میں سوراخ ) مہلک مگر قابل علاج بیماری ہے جس کے بروقت علاج سے بہت ساری اموات کو روکا جا سکتا ہے۔دل کے پیدائشی امراض کے حامل بچوں کے لیے مستقبل نئی امیدوں سے بھرپور نظرآتا ہے، اے کے یوایچ چلڈرنزاسپتال کے سروس لائن چیف ڈاکٹر بابر حسن کا کہنا ہے کہ ایک محتاط اندازے کے مطابق ہر سال 60,000 بچے سی ایچ ڈی کے ساتھ اس دنیا میں آتے ہیں جن میں سے سے بیشتر بچے دیہی علاقوں میں پیدا ہوتے ہیں،ان مریض بچوں میں ایک بڑی تعداد میں خطرناک نوعیت کا سی ایچ ڈی پایا جاتا ہے اور انھیں زندگی کا پہلا سال مکمل کرنے کے لیے آپریشن کی ضرورت ہوتی ہے۔

آغا خان یونیورسٹی نے ایسے بچوں اوران کے خاندانوںکی معاونت کے لیے ایک قدم آگے بڑھایا ہے، بچوں کے دل کے امراض کے علاج کے لیے شروع کی گئی اے کے یو کی مہم ’’ مینڈنگ کڈز ہارٹس ‘‘ کے آغاز کو 4سال ہو چکے ہیں، یہ مہم ایسے خاندانوں کے لیے امید اور مدد کی کرن ہے جو مالی طور پر مستحکم نہیں ہیں ،مہم کے آغاز سے لے کر اب تک، 1800 سے زائد دل کے امراض میں مبتلا بچوں کے پروسیجرزآغا خان یونیورسٹی اسپتال میں کیے جاچکے ہیں جن میں سے بیشترکوتقریباً 400 ملین روپے کی مالی امدادفراہم کی گئی ،’’مینڈنگ کڈز ہارٹس مہم ‘‘کی رسائی اور وسعت میں اضافے کے لیے اس سال اے کے یو ایچ نے مہم کا دائرہ 300,000 افراد تک بڑھایا ہے اور اس کے لیے آغا خان میٹرنل اینڈ چائلڈ کیئر سینٹر، حیدرآباد کے اشتراک سے ایک کیمپ قائم کیا ہے۔

کیمپ کا مقصد ایسے بچوں کا علاج ہے جو صحت کے موجودہ نظام میں علاج کی سہولتیں حاصل نہیں کر پاتے، یونیورسٹی اسپتال میں ان کا معیاری علاج فراہم کیا جائے گا، ڈاکٹر بابر حسن کامزید کہنا تھا کہ ’’ہم نے ہر سال سی ایچ ڈی کے مریض 1,000 بچوں کا علاج کرکے ان کی زندگیاں بچانے کا ہدف مقرر کیا ہے اور ہم اپنے ہدف کے حصول کے بہت قریب ہیں، مینڈنگ کڈز ہارٹس کے تحت پیڈیاٹرک سی ایچ ڈی سے متعلق عوامی آگاہی میں اضافے کی مہم کے ساتھ ساتھ فنڈز جمع کرنے کی مہم بھی جاری ہے جس کے لیے اے کے یو ایچ پیشنٹس ویلفیئر پروگرام بھرپور معاونت فراہم کر رہا ہے،اس سلسلے میںکراچی گالف کلب میں اے کے یو ایچ گالف ٹورنامنٹ منعقد کیا گیا تھا جس میں دل کی درستی کے ذریعے جان بچانے والے آپریشنز کو سراہنے اور معاونت کرنے والے افراد کی بڑی تعداد نے شرکت کی۔

یہ بھی دیکھیں

حمل ایک سے دوسری خاتون کو ’لگ سکتا ہے‘ماہرین

واشنگٹن (مانیٹرنگ ڈیسک)خواتین کے حاملہ ہونے میں جہاں کئی عوامل کارفرما ہوتے ہیں وہیں ایک …