ہفتہ , 24 اگست 2019

امریکی فوج کی کمانڈ کرنے والے سابق جنرلز نے افغانستان میں شکست قبول کر لی

واشنگٹن(مانیٹرنگ ڈیسک) امریکی فوج کی کمانڈ کرنے والے سابق جنرلز نے افغانستان میں شکست قبول کر لی۔ روسی میڈیا کی رپورٹ کے مطابق طالبان کیساتھ امن معاہدے کی پیشرفت کی خبروں پر ردعمل دیتے ہوئے سابق امریکی بریگیڈئیر جنرل ڈان بولڈک نے کہا افغانستان کی ہار وہ کڑوی گولی ہے جونگلنا پڑے گی،طالبان کی شرائط پر معاہدہ امریکہ کے ہتھیار ڈالنے کے مترادف ہے ،ہمیں اچھا لگے یا برا لیکن ہم افغان جنگ ہار چکے ہیں۔

طالبان امریکا اور نیٹو کو ہرا کر افغانستان کے فاتح بن چکے ،جنرل ڈان بولڈک کی کمانڈ میں افغانستان میں 69 امریکی فوجی پانچ سال میں مارے گئے تھے ۔میجرجنرل جیف سکلوسرنے کہا پالیسی سازوں کی غلط حکمت عملی سے افغانستان میں سینکڑوں فوجی مارے گئے ، افغانستان میں امریکی مفادات کی حفاظت کیلئے محدود تعداد میں امریکی فوج کا رہنا ضروری ہے ۔

2010 سے 2011 کے دوران پورے افغان آپریشن کو کمانڈ کرنیوالے جنرل ڈیوڈ پیٹریاس نے افغانستان سے انخلا کی مخالفت کرتے ہوئے کہا کہ ہمیں بھاری قیمت کے بجائے اپنے پالیسی مقاصد کو اہمیت دینی چاہئے ۔ رپورٹ کے مطابق ایک دوسرے جنرل نے نام ظاہر نہ کرنے کی شرط پر کہا کہ امریکہ کو 2001 کے اواخر میں ہی طالبان کے سرنڈر کوقبول کر لینا چاہئے ، اب یہ جنگ طالبان کی شرائط پر ختم ہو گی۔

یہ بھی دیکھیں

بھارت مقبوضہ کشمیر میں عوام پر ہونے والے ظلم و بربریت کو روکے:آیت اللہ سید علی خامنہ ای

تہران (مانیٹرنگ ڈیسک)رہبرانقلاب اسلامی نے کشمیری مسلمانوں کی صورتحال پر اپنی ناراضگی، دکھ اور افسوس …