اتوار , 28 فروری 2021

شامی حکومت کسی بیرونی مداخلت کے بغیر جنیوا مذاکرات میں شرکت کیلئے تیار ہے

شام کے وزیر خارجہ ولید المعلم نے کہا ہے کہ شامی حکومت ملک میں خانہ جنگی کے خاتمے کے لئے جنیوا امن مذاکرات میں شرکت کے لئے تیار ہے۔ بیجنگ میں چینی ہم منصب وانگ یی کے ساتھ مشترکہ پریس کانفرنس میں شام کے وزیر خارجہ ولید المعلم کا کہنا تھا کہ شامی حکومت کسی بیرونی مداخلت کے بغیر جنیوا مذاکرات میں شرکت کے لئے تیار ہے۔ انہوں نے کہا کہ مذاکرات میں شرکت کے لئے اپوزیشن وفد کی فہرست جتنا جلدی مل جائے گی، حکومتی وفد بھی تیار ہو جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ حکومت کو ان دہشتگرد تنظیموں کی فہرست کا بھی انتظار ہے، جن کو مذاکرات میں شرکت کی اجازت نہیں ہوگی۔ اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل نے گذشتہ ہفتے شامی حکومت اور اپوزیشن کے درمیان مذاکرات کے لئے ایک امن منصوبے کی توثیق کر دی ہے، جس کے تحت اگلے ماہ کے آخر میں جنیوا میں ہوں گے۔
دیگر ذرائع کے مطابق شام نے جنیوا امن مذاکرات میں شمولیت پر آمادگی ظاہر کر دی۔ ولید المعلم کہتے ہیں کہ ملک میں امن و امان کی صورتحال کو بہتر بنانے کیلئے بات چیت میں شامل ہونے کا فیصلہ کیا۔ شامی وزیر خارجہ ولید المعلم نے چین کے دورے کے موقع پر اپنے ہم منصب وانگ یی سے ملاقات کے بعد صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ان کا ملک جنیوا امن مذاکرات میں بغیر کسی بیرونی دباو کے شرکت کرے گا، تاکہ ملک میں امن و امان کی صورتحال کو بہتر بنایا جاسکے۔ یاد رہے کہ اقوام متحدہ کی سکیورٹی کونسل نے شام میں امن کیلئے مجوزہ امن منصوبے کے منظوری دی تھی، جس کے تحت حکومت اور اس سے متحارب دھڑوں کو جنیوا میں امن مذاکرات کی میز پر لایا جانا ہے۔

یہ بھی دیکھیں

شام پر حملہ کرنے والے اسرائیلی میزائل تباہ

شامی فوج نے صوبہ حماہ کی فضا میں اسرائیل کے میزائلی حملوں کو ناکام بنا …