منگل , 21 مئی 2019

پلوامہ حملہ ، پاکستانیوں کو 48گھنٹے میں راجستھان چھوڑنے کی وارننگ

راجستھان(مانیٹرنگ ڈیسک) راجستھان کی عدالت نے پاکستانیوں کو 48گھنٹےمیں راجستھان چھوڑنے کا حکم دے دیا جبکہ انتطامیہ نے پاکستانیوں کو ملازمت پر رکھنے اور تجارت کرنے پربھی پابندی لگا دی ہے۔تفصیلات کے مطابق پلوامہ حملے کےبعدپاکستان اوربھارت میں کشیدگی برقرار ہے ، مودی سرکار بوکھلاہٹ کاشکار ہے اور اوچھے ہتھکنڈوں پر اتر آئی ، راجستھان کے ضلع بیکانیر کی عدالت نے پاکستانی شہریوں کے لیے حکم جاری کیا ہے اڑتالیس گھنٹے میں بھارتی ریاست راجھستان چھوڑدیں۔

راجستھان کی ضلعی انتظامیہ نے دفعہ 144 نافذ کردی ہے اور انتظامیہ نے ہوٹل والوں کوپاکستانیوں کوکمرے دینے اور پاکستانیوں کو ملازمت پر رکھنے کیلئے منع کردیا ہے۔ضلعی انتظامیہ نے پاکستانیوں سےتجارت کرنے پر بھی پابندی لگاتے ہوئے کہ پاکستان کے ساتھ کسی بھی قسم کا کاروبار ی تعلق بھی قائم کرنے سے اجتناب برتیں۔دوسری جانب آئندہ ماہ اجمیر میں خواجہ غریب نواز کے عرس میں جانے والوں کے لیے مشکلات میں اضافہ کردیا ہے ، بھارتی حکومت نے پاکستانی زائرین کی ویزا درخواستیں بھی مسترد کردی۔

یاد رہے گذشتہ ہفتے مقبوضہ کشمیر کے ضلع پلوامہ میں کار بم حملے میں42 بھارتی فوجی ہلاک اور متعدد زخمی ہوئے تھے، حملے کے فوری بعد بھارت نے پاکستان پر الزام تراشی کا سلسلہ شروع کردیا تھا۔بھارت نے الزام لگایا تھا کہ پلوامہ میں حملہ کالعدم جیش محمد کی جانب سے کیا گیا ، جسے پاکستان کی پشت پناہی حاصل ہے۔

بعد ازاں پاکستان نے مقبوضہ کشمیرمیں بھارتی فوجیوں کی ہلاکت کی مذمت کرتے ہوئے بھارت کے الزامات کو مسترد کردیا تھا اور کہا تھا ہمیشہ سے مقبوضہ وادی میں تشدد کی مذمت کرتے آئے ہیں، بغیر تحقیقات کے بھارتی میڈیا اور حکومت کے الزامات کومسترد کرتے ہیں۔

یہ بھی دیکھیں

ایران امریکہ کشیدگی کم کرانے کیلئے ثالثی کو تیار ہیں، عمار الحکیم

بغداد(مانیٹرنگ ڈیسک)عراق کے سیاسی اور مذہبی رہنما اور قومی حکمت پارٹی کے صدر نے کہا …