جمعرات , 20 جون 2019

غرب اردن میں عباس ملیشیا امن وامان کے قیام میں ناکام کیوں؟

فلسطین کے مقبوضہ مغربی کنارے کے بعض شہروں میں اسرائیلی فوج کے ساتھ ساتھ فلسطینی اتھارٹی کے ماتحت سیکیورٹی ادارے بھی سرگرم عمل ہیں مگر غرب اردن کے کئی علاقے بدامنی کی زد میں‌ہیں۔ حال ہی میں نابلس میں بلوائیوں نے ایک بنک پرحملہ کرکے اس کی توڑپھوڑ کے ساتھ ساتھ ایک اے ٹی ایم بھی لوٹ لی۔ فلسطینی اتھارٹی کی پولیس ابھی ان شرپسندوں کو پکڑ نہیں‌پائی تھی کہ نابلس میں بلوائیوں نے متعدد کاروں کو پٹرول چھڑک کرآگ لگا دی۔ایسے لگتا ہے کہ عباس ملیشیا غرب اردن میں‌کے مختلف علاقوں میں قیام امن میں ناکام رہی ہے۔

مرکزاطلاعات فلسطین کے نامہ نگاروں کا کہنا ہے کہ گاڑیوں کو نذرآتش کیے جانے کے واقعات میں مسلسل اضافہ ہورہا ہے۔شہریوں کہنا ہےکہ صبح بیدارہوئے تو ان کی گاڑیاں راکھ ہوچکی تھیں۔ بعض گاڑیوں کو اس وقت بھی آگ لگی ہوئی تھی۔ شہریوں نے فوری طورپر پولیس کوشکایت کی مگر کسی نے ان کی شنوائی نہیں کہ۔

ایک مقامی صحافی طارق سویطات کاکہنا ہے کہ جنین شہر میں کئی گاڑیاں راکھ کا ڈھیر بنا دی گئیں۔ اس کاکہنا ہے کہ ہر ہفتے غرب اردن میں دوگاڑیاں نذرآتش کی جاتی ہیں مگر فلسطینی اتھارتی کے ماتحت سیکیورٹی ادارے اس کی روک تھام میں بری طرح ناکام ہیں۔

مقامی شہری عزام السعدی نے مرکزاطلاعات فلسطین سے بات کرتے ہوئے کہا کہ گاڑیوں کو نذرآتش کیے جانے کے واقعات میں مسلسل اضافہ ہو رہا ہے۔ جنین اور نابلس سمیت غرب اردن کےشمالی شہروں کے عوام نامعلوم بلوائیوں اور شرپسندوں سے نالاں ہیں۔ آئے روز ان کی گاڑیوں کو نذرآتش کردیا جاتا ہے۔

ملک کہاں‌جا رہا ہے؟
جنین کی ایک فلسطینی خاتون دعاء جبر کا کہنا ہے کہ نامعلوم افراد نے اس کی کار پر دوبار حملہ کیا اور اسے نذرآتش کرنے کی کوشش کی مگر سیکیورٹی اداروں کی طرف سے اس کی کسی قسم کی مدد اور معاونت نہیں کی گئی۔ اس نے استفسار کیا ملک کس طرف جا رہا ہے۔

مقامی ذرائع نے مرکزاطلاعات فلسطین کےنامہ نگار سے بات کرتے ہوئے کہا کہ دو ماہ کے دوران البساتین کے مقام پر دو گاڑیوں کو نذرآتش کیا گیا مگر مجرموں‌کا کوئی پتا نہیں چلا یا جاسکا۔شہریوں کا کہنا ہے کہ گاڑیوں کو نذر آتش کیے جانے اور شہریوں کی املاک کو نقصان پہنچانے کا سلسلہ جاری ہے۔ ایسے لگتا ہے کہ فلسطینی اتھارٹی کے سیکیورٹی ادارے بھی اس میں‌بری طرح‌ناکام ہیں۔بشکریہ مرکز اطلاعات فلسطین

یہ بھی دیکھیں

دس سالوں کی انکوائری

(ظہیر اختر بیدری) ’’نالائق‘‘ وزیر اعظم نیازی نے بیٹھے بیٹھے اشرافیہ کو پریشان کردیا کہ …