پیر , 16 دسمبر 2019

کینیڈا نے مینگ وینزوا کی امریکا حوالگی کی تیاری شروع کردی

اوٹاوا(مانیٹرنگ ڈیسک) کینیڈین حکام نے ہواوے کی گرفتار چیف فنانسل آفیسر مینگ وینزوا کو امریکا کے حوالے کرنے کی تیاری شروع کردی۔تفصیلات کے مطابق کینیڈا میں گرفتار ہونے والی ہواوے کمپنی کی چیف فنانشل آفیسر مینگ وینزوا کو یکم دسمبر کوکینیڈین شہر وانکوور سے حراست میں لیا گیا تھا جنہیں امریکا کے حوالے کرنے کی تیاری شروع کردی ہے۔

کینیڈین محکمہ انصاف کی جانب سے جاری بیان میں دعویٰ کیا گیا ہے کہ ’مینگ وانزوا کے خلاف ٹھوس شواہد موجود جس کے بعد طویل مشاورت کے بعد امریکا حوالگی کا فیصلہ کیا گیا ہے تاہم حتمی بیان کینیڈین اٹارنی جنرل دیں گے۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کا کہنا ہے کہ ہواوے کی اعلیٰ عہدیدار کی امریکا حوالگی سے متعلق کینیڈین عدالت میں کیس کی سماعت 6 مارچ ہوگی۔خیال رہے کہ ہواوے کی سی ایف اومینگ وانژو کو کینڈین حکام نے نومبر کے آخر میں برٹش کولمبیا کے شہر وینکوور کے ایئر پورٹ سے امریکی حکومت کی درخواست پر گرفتار کیا تھا۔

کینیڈین حکام نے 7 روز بعد مینگ وانژو کی گرفتاری کو ظاہر کیا تھا۔غیر ملکی خبر رساں ادارے کا کہنا ہے کہ امریکا نے ان الزام عائد کیا ہے کہ ایران پر امریکی پابندیوں کے باوجود چینی ٹیلی کام کمپنی ہواوے ایران کو نیٹ ورکنگ کا سامان فروخت کرتی رہی ہے اور مینگ نے ان معاہدوں کو مخفی رکھا۔امریکا کی جانب سے مینگ کی حوالگی کا مطالبہ کیا گیا تاکہ نیو یارک میں مینگ پر مقدمہ چلا سکیں، غیر ملکی میڈیا کا کہنا ہے کہ ممکن ہے مینگ کو امریکا میں 30 برس قید کی سزا سنادی جائے۔

یہ بھی دیکھیں

افغان اہلکار کی فائرنگ 27 ہلاک

افغانستان میں پیرا ملٹری فورس کے اہلکاروں کے ایک گروہ نے فوجی اہلکاروں پر اندھا …