اتوار , 9 مئی 2021

بالاکوٹ حملہ، سیٹلائٹ تصاویر نے بھی بھارتی جھوٹ کا پول کھول دیا

لندن (مانیٹرنگ ڈیسک) بالاکوٹ حملے کے مقام کی سٹیلائٹ تصاویر منظر عام پر آگئیں جس نے بھارتی دعوئوں کی قلعی کھول دی۔غیر ملکی خبر رساں ادارے رائٹرز کے مطابق سان فرانسسکو کی نجی سٹیلائٹ آپریٹر کمپنی ‘پلینٹ لیب’ نے اس مقام کی تصاویر جاری کیں جس کے بارے میں بھارت نے دعویٰ کیا تھا کہ اس نے فضائی کارروائی کر کے 300 دہشتگردوں کو ہلاک کیا۔

خبر ایجنسی کے مطابق مواصلاتی سیارے کی تصویروں میں فضائی کارروائی میں ہونے والی تباہی کے آثار نہیں ملے ۔رپورٹ کے مطابق سیٹلائٹ تصاویر میں6 عمارتوں کو دیکھا جا سکتا ہے جن کی چھتوں میں کوئی سوراخ یا جلنے کا کوئی نشان موجود نہیں اور نہ ہی عمارتوں کی دیواروں کو دھماکوں سے کسی بھی نقصان کے آثار موجود ہیں۔رائٹر نے اپنی رپورٹ میں کہا بھارت کی جانب سے جن ہتھیار کے استعمال کا دعویٰ کیا گیا تھا اس سے بھاری بھرکم عمارتیں تباہ ہوسکتی ہیں تاہم تصویروں میں نظر آنے والے شواہد سے ایسا ثابت نہیں ہوا۔رائٹرز کا کہنا ہے بھارت نے جن عمارتوں پر بم برسائے وہ تو آج بھی صحیح سلامت موجودہیں، اس کا ثبوت یہ تصاویر ہیں۔

اپریل 2018 میں بھی یہ عمارتیں موجود تھیں اور آج بھی صحیح سلامت اپنی جگہ پر ہیں۔ ایک ہزار کلو بم برسنے کے باوجود نہ ان کی چھتوں پر کوئی سوراخ ہوا اور نہ ہی کوئی دیوار تباہ ہوئی، کچھ ہوا بھی تو گنتی کے چند درخت ہی غائب ہوئے ۔ رائٹرز نے یہ تجزیہ بھارت کے آٹھ روز سے جاری پروپیگنڈا کے بعد جاری کیا۔ نیوز ایجنسی نے بھارتی حکام کو سیٹلائٹ تصاویر ای میل کرکے ان کا مؤقف بھی جاننے کی کوشش کی تاہم بھارتی وزارت خارجہ نے کوئی جواب دیا اور نہ ہی وزارت دفاع نے ۔ رپورٹ کے مطابق ایسٹ ایشیا نان پرولفریشن پراجیکٹ کے ڈائریکٹر جیفری لیوس جو ایسی تصاویر کا تجزیہ کرنے کا 15 سالہ تجربہ رکھتے ہیں، نے تصدیق کی ہے کہ تصاویر میں دکھائی دینے والی عمارت پر کسی فضائی حملے کے شواہد نظر نہیں آ رہے ۔

رائٹرز کا کہنا ہے کہ اس کے نمائندوں کو مذکورہ علاقے کے دورے اور مقامی افراد کے انٹرویوز میں بھی یہی موقف درست ثابت ہوا ہے کہ اس حملے میں سوائے ایک کوے اور چند درختوں کے کسی کو نقصان نہیں پہنچا۔ مقامی افراد نے کچھ درخت بھی دکھائے جن کے پاس سے کچھ بارودی مواد ملا تھا۔اس سال مئی میں بھارت میں عام انتخابات ہوں گے اور اکثر تجزیہ کاروں کا کہنا ہے کہ چودہ فروری کو پلوامہ حملے ، جس میں قریب چالیس بھارتی فوجی ہلاک ہو گئے تھے ، کا بدلہ لیتے ہوئے بھارت کی حالیہ کارروائی نریندر مودی اور ان کی ہندو قوم پرست سیاسی جماعت بی جے پی کو فائدہ پہنچا سکتی ہے ۔ بھارت کی جانب سے جیش محمدکے عسکریت پسندوں پر حملے کے ثبوت نہ دینے پر مودی حکومت کو سیاسی حریفوں کی تنقید کا سامنا ہے ۔

یہ بھی دیکھیں

پاکستان جنوبی ایشیا میں امن و استحکام کا خواہاں، عارف علوی

پاکستان کے صدر عارف علوی نے علاقائی تنازعات کے پرامن حل کی ضرورت پر زور …