جمعہ , 19 جولائی 2019

القدس میں یہودیوں کے لیے 700 نئے گھروں کی تعمیر کا اسرائیلی منصوبہ

مقبوضہ بیت المقدس (مانیٹرنگ ڈیسک)اسرائیلی وزارت برائے ہائوسنگ اور آباد کاری نے مقبوضہ بیت المقدس یہودی آباد کاروں‌ کے لیے مزید سیکڑوں مکانات کی تعمیر کا منصوبہ تیار کیا ہے۔اسرائیلی اخبار’یدیعوت احرونوت’ کے مطابق القدس میں یہودی آباد کاروں‌کے لیے گھروں کی تعمیر کا اعلان انتخابی معرکے کا حصہ ہے۔ ان میں سے بعض مکانات گرین لائن سے باہر تعمیر کئے گئے ہیں۔

رپورٹ کےمطابق صہیونی حکومت گرین لائن سے باہر، بسغات زئیو اور راموت یہودی آباد کاروں کے لیے 700 مکانات تعمیر کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔رپورٹ کے مطابق القدس کی الفی منشیہ ، عمنوئیل اور آدام ، بیت اریہ اور معالیہ افرایم میں 260 مکانات تعمیر کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

ادھر اسرائیلی وزیر خزانہ موشے کاحلون کا کہنا ہے کہ القدس کے جن علاقوں میں مکانات کی تعمیر کا فیصلہ کیا گیا ان میں پچھلے کچھ عرصے سے تعمیرات پر پابندی تھی۔ مگر اب وہاں پر بھی مکانات تعمیر کیے جائیں گے۔

یہ بھی دیکھیں

ایران نےامریکا کیساتھ بات چیت کا امکان مسترد کردیا

اقوام متحدہ میں ایرانی ترجمان علی رضا میر یوسفی کا کہنا ہے کہ  امریکا کیساتھ …