پیر , 22 اپریل 2019

آسٹریلوی سینیٹر کو انڈہ مارنے والے لڑکے نے کرائسٹ چرچ کے متاثرین کیلئے بڑا اعلان کر دیا

سڈنی(مانیٹرنگ ڈیسک) نسل پرست آسٹریلوی سینیٹر کو آئینہ دکھانے والے ” آسٹریلوی نوجوان ” نے اپنے لئے جمع ہونے والی خیراتی رقم کرائسٹ چرچ کےمتاثرین کو دینے کا اعلان کردیا۔وِل کولونلی کا کہنا ہے کہ مسلمان دہشت گرد نہیں، دہشتگردی کا کوئی مذہب نہیں ہوتا۔ واضح رہے کہ انڈا مارنے پر آسٹریلوی سینیٹر کی جانب سے تشدد کا نشانہ بننے پر نوجوان کیلئے 42 ہزار ڈالر کی رقم جمع کی گئی۔ جسے اب نیوزی لینڈ حملے کے متاثرین کو دیا جائے گا۔

یہ بھی دیکھیں

کابل: وزارت مواصلات و آئی ٹی کمپاؤنڈ پر حملہ، 3 اہلکاروں سمیت 7 افراد ہلاک

کابل(مانیٹرنگ ڈیسک) افغانستان کے درالحکومت کابل میں وزارت مواصلات اور انفارمیشن ٹیکنالوجی کے کمپاؤنڈ پر …