جمعہ , 19 جولائی 2019

نوروز کی مناسبت سے رہبرانقلاب کاخصوصی پیغام

تہران (مانیٹرنگ ڈیسک) 21 مارچ 2019 عید نوروز اور ہجری شمسی سال کے آغاز کی مناسبت سے رہبرانقلاب اسلامی کے خصوصی پیغام کا مکمل متن ملاحظہ فرمائے:

بسم ‌اللّه ‌الرّحمن ‌الرّحیم
یا مقلّب القلوب و الابصار یا مدبّر اللّیل و النّهار یا محوّل الحول و الاحوال حوّل حالنا الی احسن الحال.

اللہ تعالی کا شکر ادا کرتا ہوں کہ اس نے یہ موقع عنایت فرمایا کہ اس سال بھی عید نوروز جو امیر المومنین امام المتقین حضرت علی (علیہ السلام) کے یوم ولادت با سعادت سے متصل ہے، اس کی مبارک باد ملت ایران کو پیش کروں۔

عزیز ہم وطنو! آپ کواس عید کی مبارکباد!

امید کرتا ہوں کہ آپ سب خوش قسمتی کے ساتھ، صحت و عافیت کے ساتھ، مسرور دل اور روز افزوں مادی و روحانی توفیقات کے ساتھ ان شاء اللہ یہ نیا سال گزاریں گے۔

خصوصی مبارکباد پیش کرتا ہوں شہیدوں کے باعظمت خاندانوں، دفاع انقلاب وطن میں جسمانی طور پر معذور ہونے والے عزیز جانبازوں اور ان کے اہل خانہ کو۔
درود و سلام بھیجتا ہوں بزرگوار امام خمینی (رح) کی روح مطہر اور شہیدوں کی ارواح مطہرہ پر!
بڑے اہم واقعات و تغیرات والا سال ہم نے گزارا۔
جو سال گزرا اس میں ملت ایران نے حقیقی معنی میں شاندار کارکردگی کا مظاہرہ کیا۔ دشمنوں نے سازشیں تیار کر رکھی تھیں، ملت ایران کے خلاف منصوبے تیار کر رکھے تھے۔ قوم کے استحکام، ملت کی بصیرت اور نوجوانوں کی بلند ہمتی نے دشمنوں کی سازشوں کو ناکام بنادیا۔
امریکہ اور یورپ کی شدید اور بقول ان کے اب تک کی سخت ترین پابندیوں کے مقابلے میں ملت ایران نے سیاسی میدان اور اقتصادی میدان میں بہت محکم اور مقتدرانہ جواب دیا۔
22 بہمن مطابق 11 فروری کی عظیم الشان ریلیوں میں عوام کی بھر پور شرکت اور ان کا ٹھوس موقف، اس جواب کا مظہر ہے۔
سائنسی و تکنیکی ایجادات اور نالج بیسڈ کمپنیوں کی تعداد میں قابل قدر اضافہ، اندرونی طور پر انفرا اسٹرکچر اور بنیادی حیثیت کی پیداوار، جیسے ، چند روز قبل ملک کے جنوبی حصے میں گیس فیلڈ کے متعدد فیز کا افتتاح اور اس سے قبل بندرعباس کی بڑی ریفائنری کا افتتاح اور اسی طرح کے دوسرے کام جو انجام پائے، اقتصادی مقابلہ آرائی میں اختیار کئے گئے موقف کا مظہر ہیں ۔
بنابریں ملت ایران ، دشمنوں کی دشمنی اور خباثتوں کے مقابلے میں اپنی قوت، ہیبت اورعظمت کا مظاہرہ کرنے میں کامیاب رہی اور الحمدوللہ ہماری قوم ، ہمارے انقلاب اور ہمارے اسلامی جمہوری نظام کی عزت و وقار میں اضافہ ہوا ہے۔
ملک کا بنیادی مسئلہ بدستور وہی اقتصادی معاملات ہیں ۔ خاص طور پر حالیہ چند مہینوں میں عوام کی معاشی مشکلات میں اضافہ ہوا۔ ان میں کچھ تو اقتصادی امور میں ناقص انتظامی کارکردگی کا نتیجہ ہیں جنہیں حتمی طور پر حل کیا جانا چاہئے۔ کچھ پروگرام اور کچھ تدابیر سوچی گئی ہیں جو ان شاء اللہ رواں سال یعنی سن 1398 ہجری شمسی کے دوران جو اس لمحے سے شروع ہو رہا ہے، ثمر بخش ثابت ہوں گی اور عوام ان کے اثرات کو محسوس کریں گے۔
جو بات مجھے عرض کرنی ہے وہ یہ ہے کہ ملک کے سامنے فوری اور بنیادی مسئلہ،اور ملک کی اولین ترجیح معاشی مسئلہ ہے۔
اقتصادی شعبے میں ہمارے سامنے مسائل زیادہ ہیں۔ ملکی کرنسی کی قدر میں کمی بہت اہم مسئلہ ہے، عوام کی قوت خرید کا مسئلہ بھی اسی طرح اہم ہے، کارخانوں کے مسائل، گنجائش سے کم کام کا معاملہ اور بسا اوقات کارخانوں کے بند ہو جانے کا مسئلہ بھی اسی طرح بہت اہم ہے۔
یہ مشکلات ہیں۔ میں نے جہاں تک مطالعہ کیا ہے اور ماہرین کی رائے لی ہے اس کے مطابق ان تمام مشکلات کی کنجی ہے ‘قومی پیداوار کا فروغ’۔
گزشتہ ایرانی سال کو ہم نے ‘ایرانی مصنوعات کی حمایت کا سال’ قرار دیا تھا۔ میں یہ نہیں کہہ سکتا کہ اس سلوگن پر مکمل طور پر عمل ہوا لیکن اتنا ضرور کہہ سکتا ہوں کہ اس سلوگن پر بہت وسیع پیمانے پر توجہ دی گئی اور عوام کی جانب سے بھی اس نعرے کو کافی پذیرائی ملی اور اس پر عمل ہوا، یقینا اس کا اثر ہوگا۔
اس سال ‘پیداوار’ کا مسئلہ سامنے ہے۔ میں چاہتا ہوں کہ ‘پیداوار’ تمام سرگرمیوں کا محور قرار پائے۔ ‘پیداوار’ سے میری جو مراد ہے اس کی تشریح سال کے پہلے دن کی اپنی تقریر میں کروں گا کہ پیداوار کا مطلب کیا ہے۔
اگر پیداوار کا سلسلہ چل پڑے تو معاشی مشکلات کو بھی حل کر دے گا، اغیار اور دشمنوں سے ملک کو بے نیاز بھی کر دے گا، روزگار کی مشکل کو بھی حل کر دے گا اور ملکی کرنسی کی قدر میں گراوٹ کے مسئلے کو بھی کافی حد تک حل کر دے گا۔
چنانچہ پیداوار کا مسئلہ میری نظر میں اس سال کا مرکزی مسئلہ ہے۔ لہذا میں اس سال کا سلوگن ‘پیداوار کا فروغ’ قرار دے رہا ہوں۔
سب کوشش کریں کہ ملک کے اندر پیداوار کو فروغ ملے۔ سال کے شروع سے آخر تک ان شاء اللہ یہ کوشش ملک کے اندر نمایاں طور پر نظر آئے۔ اگرایسا ہوجائے تو میں امید کرتا ہوں کہ ان شاء اللہ اقتصادی مسائل حل ہونا شروع ہو جائیں گے۔
اپنا قلبی درود و سلام بھیجتا ہوں حضرت امام زمانہ (ارواحنا فداہ) کی بارگاہ میں اور آپ عزیزعوام کے لئے امام زمانہ عج سے دعا کی التجا کرتا ہوں۔ میں اللہ تعالی سے ملت ایران اور ان تمام قوموں کی سعادت و کامرانی کی دعا کرتا ہوں جو نوروز مناتی ہیں۔
و السّلام‌ علیکم‌ و رحمة اللّه ‌و برکاته

یہ بھی دیکھیں

ایران نےامریکا کیساتھ بات چیت کا امکان مسترد کردیا

اقوام متحدہ میں ایرانی ترجمان علی رضا میر یوسفی کا کہنا ہے کہ  امریکا کیساتھ …