جمعرات , 25 اپریل 2019

  ایران:سپریم لیڈر آیت اللہ سید علی خامنہ ای نے سرعام اسکارف اتارنے والی خاتون کی سزا معاف کردی

تہران(مانیٹرنگ ڈیسک)  ایران کے سپریم لیڈر آیت اللہ خامنہ ای نے احتجاج کے دوران سرعام اسکارف اتارنے والی خاتون کی سزا معاف کردی۔غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق ایران میں عوامی مقام پر احتجاجاً اسکارف اتارنے والی خاتون کو ایک سال قید کی سزا سنائی گئی تھی جسے سپریم لیڈر آیت اللہ خامنہ ای نے معاف کردیا جس کے بعد ایرانی خاتون کو جلد رہا کردیا جائے گا۔

رپورٹ کے مطابق سزا پانے والی خاتون وداع موحد کے وکیل پیام درفشاں نے میڈیا کو بتایا کہ سپریم لیڈر آیت اللہ خامنہ ای کی جانب سے سزا معاف کرنے پر خاتون کی جیل سے رہائی کے لیے بنیادی اقدامات مکمل کیے جارہے ہیں اور آئندہ چند دنوں میں وہ جیل سے رہا کردی جائیں گی۔

واضح رہے کہ ایرانی خاتون وداع موحد نے گزشتہ ماہ مارچ میں احتجاج کے طور پر عوامی مقام پر اسکارف اتارا تھا جس پر انہیں گرفتار کرلیا گیا تھا اور ایک سال قید کی سزا سنائی گئی تھی۔ایرانی خاتون کو 2017 میں بھی سرعام حجاب اتارنے کے الزام میں گرفتار کیا گیا تھا اور وداع موحد نے دو سال کی قید کی سزا بھی کاٹی تھی۔

یاد رہے کہ ایرانی قانون کے مطابق خواتین کو پبلک مقامات پر عبایا اور اسکارف پہننا لازم ہے، قانون کی خلاف ورزی پر دو ماہ قید کی سزا اور 25 ڈالر جرمانہ عائد کیا جاتا ہے۔خیال رہے کہ گزشتہ روز ایران میں عدالت نے وکیل کو گورنمنٹ کے خلاف احتجاج کے لیے عوام کو اکسانے کا جرم ثابت ہونے پر 13 سال قید کی سزا سنائی تھی۔

یہ بھی دیکھیں

انتقامی حربےصہیونی حکام کے لیے شرمندگی کاباعث بنیں گے: حماس

مقبوضہ بیت المقدس (مانیٹرنگ ڈیسک)اسلامی تحریک مزاحمت ‘حماس’ نے شہید فلسطینی عمر ابو لیلیٰ کے …