اتوار , 19 مئی 2019

نیتن یاھو نے ہماری پیٹھ میں‌خنجر گھونپا:والدہ شائول ارون

مقبوضہ بیت المقدس (مانیٹرنگ ڈیسک)فلسطین کےعلاقےغزہ کی پٹی میں جنگی قیدی بنائے گئےاسرائیلی فوجی ‘شائول ارون’کی والدہ نے صہیونی حکومت اور وزیراعظم بنجمن نیتن یاھو کو کڑی تنقید کا نشانہ بنایا ہے۔ان کا کہنا ہے کہ اسرائیلی حکومت نے بار بار ان کے بیٹے کی رہائی کا وعدہ کیامگر ان سےکیا گیا کوئی وعدہ پورا نہیں کیا گیا بلکہ حکومت نے ان کی پیٹھ میں خںجر گھونپا ہے۔

عبرانی ٹی وی چینل 7 کی رپورٹ کے مطابق مغوی فوجی کی والدہ کاکہنا ہے کہ حکومت نے میری پیٹھ میں خنجر گھونپا اور مجھ سے کیاکوئی وعدہ پورانہیں کیا۔انہوں‌نے مزید کہاکہ آج ہم ایک ایسا مذہبہ تہوار منار ہےہیں جس میں یہودیوں کو غلامی سےنجات دلائی گئی مگرہماری آزادی کہاں ہے۔

اپریل 2015ء کو اسلامی تحریک مزاحمت’حماس’ کے عسکری ونگ عزالدین القسام بریگیڈ نے چار اسرائیلی فوجیوں‌کے جنگی قیدی بنائے جانے کی تصدیق کی تھی تاہم ان کی مزید تفصیل نہیں‌بتائی گئی۔ ان میں شائول ارون نامی ایک اسرائیلی فوجی بھی شامل ہے جسےسنہ 2014ء کی جنگ میں غزہ میں داخل ہونے کےدوران القسام نے ایک کارروائی میں پکڑلیا تھا۔

شائول ارون اور دیگر جنگی قید بنائے گئے اسرائیلی فوجیوں کی رہائی کے لیے ان کے خاندانوں کی طرف سے حکومت پر باربار دبائو ڈالا جاتا رہا ہے مگر نیتن یاھو حکومت غزہ میں جنگی قیدی بنائے گئے صہیونی فوجیوں کو رہا کرانے میں ناکام رہی ہے۔

یہ بھی دیکھیں

بحرین :شاہی حکومت کے خلاف مختلف شہروں میں احتجاجی مظاہرے

منامہ (مانیٹرنگ ڈیسک)بحرین کے عوام نے ملک کے مختلف علاقوں میں شاہی حکومت کی علما …