پیر , 10 مئی 2021

سری لنکا میں برقع اور نقاب پر پابندی پرغور

کولمبو(مانیٹرنگ ڈیسک) سری لنکا کے اراکین اسمبلی نے ملک بھر میں برقع اور نقاب پہننے پر پابندی عائد کرنے کے لیے قانون سازی پر غور شروع کردیا ہے۔بین الاقوامی خبر رساں ادارے کے مطابق سری لنکا میں گرجا گھروں اور ہوٹلوں پر 8 خود کش دھماکوں میں 300 سے زائد افراد کی ہلاکت کے بعد برقع اور نقاب پہننے پر پابندی عائد کرنے کے فیصلے کا امکان ہے۔

سری لنکن پارلیمنٹ کے رکن اسمبلی اشو مارا سنگھے نے سی این این سے بات کرتے ہوئے کہا کہ ہم کسی مذہب کے خلاف نہیں ہیں تاہم اب برقع اور نقاب لینے پر پابندی لگانے کے لیے مباحث کیے جا رہے ہیں۔سری لنکا کے رکن اسمبلی نے مزید کہا کہ سری لنکا میں عمومی طور پر مسلمان خواتین بھی برقع یا نقاب نہیں لیتی ہیں تاہم کچھ لوگ شدت سے اس پر عمل پیرا ہیں۔ چہرہ ڈھک لینے سے شناخت ممکن نہیں رہتی جس کا دہشت گرد فائدہ اُٹھاسکتے ہیں۔

واضح رہے کہ سری لنکا میں ہونے والے 8 خود کش دھماکوں کی ذمہ داری داعش نے قبول کی ہے تاہم حکومت تاحال اپنے سابق موقف پر قائم ہے جس میں دھماکوں میں مقامی تنظیم التوحید کے ملوث ہونے کا دعویٰ کیا گیا تھا۔

یہ بھی دیکھیں

ایران و چین معاہدے پر امریکہ چراغ پا

امریکی صدر نے ایران اور چین کے 25 سالہ معاہدے پر سخت تشویش کا اظہار …