جمعرات , 4 مارچ 2021

یمنی عوام مذاکراتی عمل کے ذریعے اپنے مسائل حل کرنے کی توانائی رکھتے ہیں

انصاراللہ کی انقلابی کمیٹی کے سربراہ محمد علی الحوثی نے عوامی رضاکار فورس کے اعلی کمانڈروں سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ اگر جارح ممالک یمن کے اندرونی معاملات میں مداخلت بند کردیں تو یمنی گروہ باہمی مسائل اور اختلافات کو آسانی کے ساتھ حل کرسکتے ہیں۔ انہوں نے یمنی عوام کے خلاف سازشوں کی جانب اشارہ کرتے ہوئے، امن و استحکام کے قیام کی کوششیں جاری رکھے جانے کی ضرورت پر زور دیا۔سعودی عرب نے امریکہ اور متحدہ عرب امارات سمیت بعض عرب ملکوں کو ساتھ ملا کر چھبیس مارچ سے یمن پر جارحیت کا آغاز کیا تھا جس کا مقصد ملک کے مفرور سابق صدر منصور ہادی کو دوبارہ اقتدار میں لانا اور عوامی انقلابی تحریک انصاراللہ کو حکومت سے دور رکھنا تھا۔ یمن پر پچھلے نو ماہ سے جاری سعودی جارحیت میں ہزاروں بے گناہ یمنی شہری شہید اور زخمی ہوچکے ہیں جبکہ اس ملک کی بنیادی تنصیبات، اسپتال اور تعلیمی ادارے تباہ کردیئے گئے ہیں۔

یہ بھی دیکھیں

شہید قاسم سلیمانی کے قتل کا جواب امریکہ کو دینا ہو گا: ایران

مجید تخت روانچی نے ایران اور امریکہ کے مابین قیدیوں کے تبادلے کے سوال پر …