بدھ , 12 مئی 2021

بھارت میں 400 سال قدیم مسجد شہید ، مسلمانوں کا احتجاج

حیدر آباد(مانیٹرنگ ڈیسک)بھارت کی ریاست تلنگانہ کے دارالحکومت حیدرآباد میں انتظامیہ نے سڑک کوتوسیع دینے کی آڑ میں 4 سو سالہ قدیم تاریخی یکخانہ مسجد کو شہید کردیا گیاہے ، گریٹ حیدرآباد میونسپل کارپوریشن نے عنبر پیٹ کے مرکز میں واقع علاقے کی قدیم ترین مسجد کو شہید کردیا، ریاست تلنگانہ کے وقف بورڈ اور دیگر اداروں نے مسجد کی شہادت کو غلطی قرار دیا اور کہا کہ جس جگہ مسجد تعمیر تھی، وہ جگہ 400 سال سے مسجد انتظامیہ کے لیے وقف تھی، یکخانہ مسجد کی شہادت مسلمانوں کے مقدس ماہ رمضان المبارک سے چند دن قبل عمل میں آئی ہے ، ہزاروں مسلمان نمازیوں کو عبادت میں شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑرہا ہے۔

مسلمانوں نے مظاہرے شروع کیے تو وقف بورڈ نے مسجد کی تعمیر دوبارہ کرانے کا اعلان کیا تھا، جس کے بعد مسلمانوں نے 5 مئی کو مسجد کی جگہ پر رمضان المبارک کے پیش نظر عارضی چھت ڈالنے کی کوشش کی تو ہندو انتہاپسندوں نے مظاہرہ شروع کردیا، بی جے پی کے رکن اسمبلی راجا سنگھ بھی اپنے درجنوں کارکنان کے ساتھ پہنچے اور حالات کو کشیدہ کرنے کی کوشش کی، ہندوؤں اور مسلمانوں کے درمیان پتھراؤ بھی ہوا، اہلکاروں سمیت متعدد افراد زخمی ہوگئے ۔

یہ بھی دیکھیں

ایران و چین معاہدے پر امریکہ چراغ پا

امریکی صدر نے ایران اور چین کے 25 سالہ معاہدے پر سخت تشویش کا اظہار …