جمعہ , 23 اگست 2019

ایسیٹ ڈکلیریشن اسکیم’ کیا ہے؟’

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک)وفاقی کابینہ نے ایسیٹ ڈکلیریشن اسکیم کی منظوری دے دی۔کالے دھن کو معیشت میں کس طرح لایا جائے گا تفصیلات ملاحظہ ہوں۔اسکیم کےتحت مقامی اورغیرملکی اثاثے ظاہرکئے جاسکیں گے۔اسکیم میں ٹیکس کی مجوزہ شرح کوکم کئے جانےکاامکان ہے۔اسکیم میں بےنامی اثاثوں پر25کی بجائے20فیصدٹیکس اداکرنےکی تجویز دی گئی ہے۔

اسکیم کاپہلا مرحلہ رواں مالی سال 30 جون کومکمل ہوجائےگا۔بےنامی اثاثوں پر30جون تک5فیصدٹیکس ادا کرنا ہوگا۔ستمبر30 تک15 کی بجائے10 فیصد ٹیکس دینا ہوگا۔بےنامی اثاثوں پردسمبرتک20فیصد ٹیکس ادا کرناہوگا۔اسکیم کا آخری مرحلہ 31 دسمبر 2019 کو مکمل ہو جائے گا۔

اسکیم کے مطابق پراپرٹی کو1سے4فیصدٹیکس ادائیگی سےقانونی حیثیت حاصل ہوگی۔30جون کےبعدپراپرٹی 2فیصدپرکلیئر کرائی جا سکے گی۔31دسمبر تک4فیصدٹیکس ادائیگی سے پراپرٹی کلیئرہوگی۔بیرون ملک اثاثے کلیئرکرانےسےپہلےپاکستان منتقل کرناہوں گے۔بیرون ملک اثاثوں کوبانڈسرٹیفکیٹ میں تبدیل کیاجاسکتا ہے۔اثاثے ظاہر کرنیوالوں کے کوائف خفیہ رکھے جائیں گے۔کوائف ظاہرکرنیوالےافسرکو10لاکھ روپےجرمانہ، 1سال قیدہوگی۔اسکیم کے بعد حکومت کوئی نئی اسکیم جاری نہیں کرےگی۔

یہ بھی دیکھیں

ملکی زرمبادلہ کے ذخائر میں 55 کروڑ ڈالر کا اضافہ ہوگیا: مرکزی بینک

کراچی(مانیٹرنگ ڈیسک) مرکزی بینک کے مطابق ملکی زرمبادلہ کے ذخائر میں 55 کروڑ ڈالر کا …