جمعرات , 19 ستمبر 2019

کشمیر: ریاستی دہشت گردی جاری، مزید 4 نوجوان شہید

سری نگر (مانیٹرنگ ڈیسک)مقبوضہ کشمیر میں بھارتی فوج کا جبر جاری ہے اور حالیہ ریاستی دہشت گردی میں مزید 4 نوجوان شہید ہوگئے۔ذرائع کے مطابق ضلع پلوامہ کے علاقے پَنزگام میں بھارتی فوج کی جانب سے محاصرہ کرکے کیے گئے آپریشن میں 3 نوجواب شوکت احمد ڈار، عرفان احمد اور مظفر احمد شہید ہوئے۔فورسز نے علاقے میں ایک گھر کو بھی دھماکا خیز مواد سے اڑا دیا۔

بھارتی فوج کے جبر کے خلاف پنزگام میںسینکڑوں افراد نے مظاہرہ کیا جن کے خلاف فورسز نے پیلٹ گنز اور آنسو گیس کا استعمال کیا جس کے بعد علاقہ مکینوں اور فوجی اہلکاروں کے درمیان جھڑپ کی صورتحال پیدا ہوئی۔رپورٹ میں کہا گیا کہ ضلع بارہ مولا کی تحصیل سوپور میں بھی اسی طرح کے آپریشن میں ایک نوجوان شہید ہوا۔قابض فورسز نے مظاہروں کے بڑھنے کے خوف سے وادی کے کئی علاقوں میں انٹرنیٹ سروس معطل کردی جبکہ جنوبی کشمیر میں مسلسل دوسرے روز ٹرین سروس بھی معطل رہی۔

خیال رہے کہ 1989 سے متعدد مسلح گروپ بھارتی فوج اور ہمالیہ کے علاقوں میں تعینات پولیس سے لڑتے آئے ہیں اور وہ پاکستان سے انضمام یا کشمیر کی آزادی چاہتے ہیں۔اس لڑائی کے دوران اب تک ہزاروں لوگ مارے جاچکے ہیں، جس میں زیادہ تر عام شہری ہیں۔کشمیر میں جاری اس تشدد میں گزشتہ دہائی میں تیزی سے کمی آئی تھی لیکن بھارتی فوج کے عسکریت پسندوں کے خلاف آپریشن آل آؤٹ کے نتیجے میں 350 اموات ہوئیں اور وادی میں جاری کشیدگی میں مزید اضافہ ہوگیا۔

یہ بھی دیکھیں

ماسکو , واشنگٹن کے غیرذمہ دارانہ اقدامات کا جواب دینے پر مجبور ہے:روسی نائب وزیر خارجہ

ماسکو(مانیٹرنگ ڈیسک)روس کے نائب وزیرخارجہ نے امریکہ کے غیرذمہ دارانہ اقدام کو دنیا میں ایٹمی …