جمعرات , 12 دسمبر 2019

انڈونیشیا صدارتی انتخابات کے بعد حالات کشیدہ، 6 افراد ہلاک

جکارتہ (مانیٹرنگ ڈیسک) انڈونیشیا میں صدارتی انتخابات میں صدر جوکو ودودو کی جیت کے اعلان کے بعد صورتحال کشیدہ ہوگئی اور پُرتشدد واقعات میں 6 افراد ہلاک ہوگئے جبکہ دارالحکومت میں فوج تعینات کردی گئی ہے۔غیرملکی خبر رساں ادارے کے مطابق انڈونیشین انتخابات میں صدر ودودو کی 55.5 فیصد ووٹوں سے کامیابی کے اعلان کے بعد مخالف امیدوار پرابوو سبنتو کے ہزاروں حامی سڑکوں پر نکل آئے اور الیکشن کمیشن کا گھیراؤ کرلیا، مشتعل افراد نے توڑ پھوڑ اور جلاؤ گھیراؤ کیا۔دارالحکومت جکارتہ میں ہزاروں مظاہرین جمع ہوئے جنہیں منتشر کرنے کے لیے پولیس نے آنسو گیس کی شیلنگ بھی کی۔

پولیس کے مطابق حکومت مخالف مظاہروں میں اب تک 6 افراد ہلاک اور 200 زخمی ہوگئے۔نیشنل پولیس چیف کا کہناہےکہ عوام کو پولیس کو اس کا ذمہ دار نہیں سمجھنا چاہیے۔خبر رساں ایجنسی کے مطابق پولیس نے مظاہرین کو ہتھیار کی ترسیل کے الزام میں خصوصی فورس کے سابق کمانڈر سمیت 20 افراد کو گرفتار کر لیا۔

احتجاج کے باعث دارالحکومت جکارتہ میں تعلیمی ادارے، کاروباری مراکز اور ٹرین اسٹیشن بند ہیں جب کہ افواہوں کی روک تھام کے لیے بعض علاقوں میں سوشل میڈیا کو بھی بند کردیا گیا ہے۔شہر کی سیکیورٹی کے لیے فوج کے 30 ہزار اہلکار تعینات کیے جا چکے ہیں۔

یہ بھی دیکھیں

ناروے میں مذہبی انتہا پسندی سے نمٹنے کیلیے 10 ہزار قرآن پاک تقسیم کرنے کا اعلان

  ناروے مسلم ایسوسی ایشن کی جانب سے مذہبی انتہا پسندی اور نفرت انگیزی سے …