جمعہ , 22 نومبر 2019

ناقص مضر صحت خوراک، روزہ دار فلسطینی اسیران سے نیا صہیونی انتقام

مقبوضہ بیت المقدس (مانیٹرنگ ڈیسک)فلسطینی محکمہ امور اسیران کی طرف سے جاری کردہ ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ اسرائیل کے بدنام زمانہ حراستی مرکز ‘عتصیون’ میں قید سیکڑوں فلسطینی روزہ داروں کو افطاری اور سحری کے اوقات میں ناقص اور مضر صحت خوراک فراہم کی جاتی ہے۔ ناقص اور مضر صحت خوراک کی وجہ سے اسیران کو شدید مشکلات کا سامنا ہے۔

فلسطینی محکمہ اموراسیران کے مطابق غرب اردن کے جنوبی شہر بیت لحم میں قائم ‘عتصیون’ میں پابند سلاسل فلسطینی روزہ داروں کو شدید مشکلات کا سامنا ہے۔ ماہ صیام میں ایک طرف اسرائیلی جیل انتظامیہ نے اسیران کے ساتھ سختیوں میں اضافہ کر دیا ہے اور وہیں انہیں افطاری اور سحری کے اوقات میں مناسب کھانا اور سخت گرمی کے باوجود اسیرن کو ٹھنڈا پانی فراہم نہیں کیا جاتا۔

بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ صہیونی جیلر رات کے وقت جب چاہتے ہیں روٹی کا ایک ٹکڑا یا کوئی اور چیز، سخت گرمی پانی اور آلودہ خوراک دیتے ہیں۔اسیران کو ماہ صیام میں خوراک اور پانی کی شدید قلت کا سامنا ہے اور اسرائیلی جیل انتظامیہ ماہ صیام کو اسیران کے ساتھ انتقامی حربے کے طور پر استعمال کرتی ہے۔

یہ بھی دیکھیں

صدر روحانی کا معاشی مشکلات پر عوام کے صبر و تحمل کا شکریہ

تہران: اسلامی جمہوریہ ایران کے صدر حسن روحانی نے کابینہ کے اجلاس میں ایرانی عوام …