جمعرات , 23 جنوری 2020

2 سال بعد قطری طیارے کی سعودی عرب میں لینڈنگ

دوحہ (مانیٹرنگ ڈیسک)خلیجی ممالک میں 2 سال قبل پیدا ہونے والے تنازع کے بعد پہلی مرتبہ قطری امیر شیخ تمیم بن حمد الثانی کا طیارہ سعودی عرب کے جدہ ایئر پورٹ پر لینڈ ہوا۔قطر ایئرویز نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر بیان جاری کرتے ہوئے کہا کہ ‘قطر ایئرویز کا طیارہ خلیجی بحران اور قطر پر پابندیوں کے بعد پہلی مرتبہ جدہ ایئرپورٹ پر لینڈ ہورہا ہے’۔

سعودی عرب کی سربراہی میں متحدہ عرب امارات، بحرین اور مصر سمیت چند عرب ممالک نے جون 2017 میں قطر سے سفارتی قطع تعلق کرتے ہوئے تمام تعلقات معطل کیا تھا اور اپنے ملک میں قطری شہریوں کے داخلے پربھی پابندی عائد کی تھی۔سعودی عرب اور ان ممالک نے قطر پر الزام عائد کیا تھا کہ وہ دہشت گردوں کی معاونت اور خطے میں عدم استحکام کے لیے ایران سے تعلقات استوار کر رکھا ہے تاہم قطر نے ان تمام الزامات کو مسترد کردیا تھا۔

دوسری جانب دوحہ نے ان الزامات کو مسترد کرتے ہوئے کہا تھا کہ خلیجی ممالک دوحہ میں تبدیلیاں لانا چاہتے ہیں۔گزشتہ ہفتے قطر کو سعودی عرب کی جانب سے خطے کے حوالے سے منعقدہ ہنگامی اجلاس میں شرکت کا دعوت نامہ موصول ہوا تھا جس میں ایران اور امریکا کے درمیان بڑھتی ہوئی کشیدگی کے بعد خطے کی صورت حال پر تبادلہ خیال کیا جائے گا۔

ریاض نے عرب لیگ کے ایک رکن ملک، خلیج تعاون کونسل (جی سی سی) سے تعلق رکھنے والے ممالک کے علاوہ، کو حال ہی میں ہونے والے حملوں کے بعد شرکت کی دعوت دی۔خیال رہے کہ متعدد ٹینکرز کو پُر اسرار حالات میں مشرق وسطیٰ کے ساحلی علاقوں میں نشانہ بنایا گیا اور بعد ازاں سعودی عرب میں تیل کی پائپ لائن کو یمنی حوثی قبائل کی جانب سے ڈرون حملے کا نشانہ بنایا گیا۔

یہ بھی دیکھیں

فلسطین کی آزادی تک دنیا میں امن قائم نہیں ہو سکتا، ایرانی سپریم لیڈر

تہران: ایران کے رہبر انقلاب اسلامی آیت اللہ علی خامنہ ای نے کہا ہے کہ …