پیر , 17 جون 2019

دنیا کے پرامن ممالک میں آئس لینڈ کا پہلا نمبر، پاکستان بھی شامل

کراچی(مانیٹرنگ ڈیسک) عالمی ادارے نے دنیا کے پرامن ممالک کی فہرست جاری کردی جس کے مطابق آئس لینڈ اپنی اول جگہ بنانے میں ایک بار پھر کامیاب رہا۔تفصیلات کے مطابق عالمی ادارے (گوبل پیس انڈیکس) نے سال 2019 کے دنیا کے پرامن ممالک کی فہرست جاری کی جس میں آئس لینڈ پہلے ، نیوزی لینڈ دوسرے، پرتگال، آسٹریا اور ڈنمارک بالترتیب تیسرے، چوتھے اور پانچویں نمبر پر رہے۔

فہرست میں دنیا بھر کے 163 ممالک کو پانچ درجات (بہت پرامن، پرامن، درمیانہ، کم، بہت کم اور فہرست میں نہ شامل) میں تقسیم کیا گیا، سیکیورٹی اقدامات، غیرملکی سیاحوں کی آمد، موسمیاتی تغیراتی تبدیلیوں پر قابو پانے کے لیے اٹھائے گئے حکومتی اقدامات، معاشی اور امن و امان کی صورتحال کے حساب سے ممالک کو نمبرز دیے گئے۔

گزشتہ چودہ سال سے سرفہرست رہنے والے ملک آئس لینڈ کو اس بار کی کوئی مات نہیں دے سکا اور سارا سال میں وہاں صرف 18 افراد قتل ہوئے جبکہ غیرملکی سیاحوں کی سب سے زیادہ تعداد سیر کے لیے پہنچی۔

دنیا کے سب سے زیادہ پرامن ممالک
فہرست میں نیوزی لینڈ دوسرے، پرتگال تیسرے، آسٹریا چوتھے، ڈنمارک پانچویں، کینیڈا چھٹے، سنگاپور ساتویں، سلووینا آٹھویں، جاپان نویں، گزیچ ری پبلک دسویں، سوئٹزرلینڈ گیارہویں، آئرلینڈ بارہویں اور آسٹریلیا تیرہوں نمبر پر جگہ بنانے میں کامیاب رہے۔

پرامن ممالک
فن لینڈ، بھوٹان، ملائشیاء، نیدرلینڈ، بلیجیئم، سوئیڈن، ناروے، ہنگری، جرمنی، سلوواکیا، رومانیہ، بلغاریہ، چلی، پولینڈ، قطر، اسپین، کوسٹاریکا، تائیون ، اٹلی وغیرہ شامل ہیں۔ (فہرست میں چودہ نمبر سے 72 نمبر تک دنیا کے پرامن ممالک کے نام درج ہیں)۔

درمیانے پُرامن ممالک
فہرست کے مطابق نیپال، انگولہ، اردن، راوندا، پیرو، بوسنیا، تنوشیا، جمیکا، پیرگوائے، تھائی لینڈ سمیت دیگر ممالک کو درمیانے درجے کا پرامن ملک بتایا گیا۔

کم پُرامن ممالک
دنیا کے کم پرامن ممالک کی تعداد 28 ہے، جس میں بھارت، ایران، امریکا، ساؤتھ افریقا، شام، سعودی عرب، فلپائن، میکسیکو، فلسطین، اسرائیل، ونزیلا، لبنان وغیرہ شامل ہیں۔اسی طرح اگلے درجے (بہت کم پُرامن ممالک) کی فہرست میں پاکستان کا نام شامل ہے، رپورٹ کے مطابق پاکستان مجموعی طور پر فہرست میں 3.072 نمبروں کے ساتھ 153ویں نمبر پر ہے جبکہ گزشتہ برس ایک درجہ ترقی کے بعد 150 پر پہنچا تھا، رواں سال پاکستان تین درجے تنزلی کے بعد نیچے گیا۔

روس کی صورتحال اس سے بھی زیادہ خراب ہے کیونکہ وہ پاکستان سے ایک درجہ نیچے ہے جبکہ سب سے خطرناک ملک افغانستان کو قرار دیا گیا ہے جو فہرست میں سب سے آخری یعنی 163ویں نمبر پر ہے، رپورٹ میں سال 2018 کو دیگر کے مقابلے میں قدرے بہتر اور پرامن سال قرار دیا گیا۔

یہ بھی دیکھیں

فلسطینیوں پرالقدس میں‌ ہر طرح کی پابندی کا نیا صہیونی قانون

یروشلم (مانیٹرنگ ڈیسک)اسرائیلی حکومت نے مقبوضہ بیت المقدس میں فلسطینیوں‌ کی ہر طرح کی سرگرمیوں …