اتوار , 8 دسمبر 2019

کوئٹہ: کوئلے کی کان میں پھنسے 4 مزدور جاں بحق، ایک کو زندہ نکال لیا گیا

ڈائریکٹری جنرل (ڈی جی) پاکستان ڈیزاسٹر منیجمنٹ اتھارٹی (پی ڈی ایم اے) عمران زرکون کے مطابق کان میں پھنسے مزدوں کی تلاش کے لیے 48 گھنٹوں سے آپریشن جاری ہے۔

واضح رہے کہ سیکریٹری مائنز اینڈ منرلز زاہد سلیم اور ڈائریکٹر جنرل پی ڈی ایم اے عمران زرکون ڈیگاری حادثے کے ریسکیو آپریشن کی رات گئے تک نگرانی میں مصروف رہے۔

علاوہ ازیں کان میں پیش آنے والے حادثے پر مزدورں نے انتظامیہ کے خلاف احتجاج کیا اور اس حادثے میں ملوث افراد کے خلاف کارروائی کا بھی مطالبہ کیا۔

احتجاج کرنے والے مزدوروں نے ڈی جی پی ڈی ایم اے عمران زرکون اور سیکریٹری مائنز زاہد سلیم سے مذاکرات کیے جس کے کامیاب ہونے پر احتجاج ختم کردیا گیا۔

ڈی جی عمران زرکون نے مزدوروں کو یقین دہانی کروائی کہ کان میں پھنسے مزدوروں کو نکالنے کے لیے تمام وسائل بروئے کار لائے جارہے ہیں اور آخری کان کن کو نکالے جانے تک ریسکیو آپریشن جاری رہے گا۔

انہوں نے مزدوروں کو بتایا کہ ایمبولینسز، میڈیکل ٹیمیں، طبی امداد کے ہمراہ جائے حادثہ پر موجود ہیں اور امدادی کارروائی میں مصروف ہیں۔

عمران زرکون کا کہنا تھا کہ اس وقت 5 کان کن پھنسے ہوئے ہیں جبکہ 4 ہزار فٹ گہری کان سے مزدوروں کو نکالنے میں ریکسیو کو کافی مشکلات کا سامنا ہے۔

یہ بھی دیکھیں

ایف اے ٹی ایف ایشیا پیسیفک گروپ کا اجلاس آج، پاکستانی وفد شرکت کریگا

اسلام آباد: ایف اے ٹی ایف ایشیا پیسیفک گروپ کا اجلاس آج سے شروع ہوگا، …