پیر , 16 دسمبر 2019

یونان میں سمندری طوفان سے تباہی اور جانی نقصان

فرانسیسی خبر رساں ادارے ’اے ایف پی‘ کے مطابق یونان کے شمال میں واقع جزیرہ نما علاقے ‘خالکیدیکی’ میں طوفان کے نتیجے میں 2 بچوں سمیت 6 سیاح ہلاک ہوئے جن کا تعلق جمہوریہ چیک، روس اور رومانیہ سے تھا۔

کوسٹ گارڈ نے بتایا انہیں گزشتہ روز سے لاپتہ ایک مقامی مچھیرے کی لاش سمندر سے ملی۔

ایمرجنسی بریفنگ میں حکومت کے ترجمان نے بتایا کہ علاقے میں طوفان کے نتیجے میں 100 کلومیٹر فی گھنٹہ کی رفتار سے ہوائیں چلیں۔

انہوں نے کہا کہ قریبی ہسپتالوں میں 23 افراد تاحال زیر علاج ہے جن میں ایک 72 سالہ خاتون بھی شامل ہیں، جن کی حالت انتہائی تشویشناک ہے۔

ترجمان نے بتایا کہ زخمیوں میں شامل افراد سیاح ہیں تاہم انہوں نے سیاحوں کی شہریت بتانے سے انکار کردیا، انہوں نے بتایا کہ خالکیدیکی جانے والا ایک راستہ تاحال بند ہے اور علاقے میں بجلی کی بحالی میں 2 روز لگیں گے۔

وزیر توانائی نے کہا کہ مقامی افراد اور سیاحوں کی ضروریات پوری کرنے کے لیے پاور جنریٹرز پہنچائے جارہے ہیں۔

یونان کے وزیراعظم کیریاکوس متسوتاکیس نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر ایک ٹوئٹ میں کہا کہ ’ہم مسائل کو حل کرنے اور جن چیزوں کو نقصان پہنچا انہیں ٹھیک کرنے کی کوشش کر رہے ہیں‘۔

عینی شاہدین کے مطابق طوفان کا دورانیہ صرف 20 منٹ تھا لیکن وہ اتنا طاقت ور تھا کہ مختصر دورانیے میں گاڑیاں الٹ گئیں، درخت جڑوں سے اکھڑ گئے اور عمارتوں کو شدید نقصان پہنچا۔

یہ بھی دیکھیں

وحدت اسلامی عالمی کانفرنس اپنے اختتام کو پہونچی (تصویری رپورٹ)