جمعرات , 22 اگست 2019

یمن کی نیشنل آئل کمپنی کے ملازمین کا سعودی اتحاد کے خلاف مظاہرہ

جارح سعودی اتحاد نے پچھلے دنوں یمن کے چھے آئل ٹینکروں کو جن کے پاس اقوام متحدہ کا اجازت نامہ بھی تھا الحدیدہ بندرگاہ کے راستے میں روک لیا۔المسیرہ ٹیلی ویژن چینل نے خبردی ہے کہ یمن کی نیشنل آئل کمپنی اور اس سے وابستہ یونینوں نے صنعا میں اقوام متحدہ کے نمائندہ دفتر کے سامنے اجتماع کرکے سعودی اتحاد کی سمندری ڈکیتی کی مذمت کی اور مطالبہ کیا کہ جارح سعودی اتحاد ان آئل ٹینکروں کو جلد سے جلد چھوڑ دے۔یمن کی نیشنل آئیل کمپنی کے ترجمان امین الشباطی نے یمنی عوام کے مصائب و آلام پر اقوام متحدہ کی خاموشی پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہاکہ اقوام متحدہ جو انسانی حقوق کا دفاع کرنے کا دعوی کرتی ہے اسے چاہئے کہ وہ یمن کے مظلوم عوام کے سلسلے میں اپنے اخلاقی اور قانونی فرائض پر عمل کرے۔اس سے پہلے یمن کے پیٹرولیم کے وزیر احمددارس نے کہا تھا کہ جارح سعودی اتحاد نے جیبوتی میں یمن کے آٹھ آئیل ٹینکروں کو روک لیا ہے۔

یہ بھی دیکھیں

ایران یک طرفہ طور پر ایٹمی معاہدے کی پابندی کا سلسلہ جاری نہیں رکھ سکتا، صدر حسن روحانی

تہران (مانیٹرنگ ڈیسک)صدر مملکت حسن روحانی نے ایٹمی معاہدے پر عملدرآمد کی سطح میں کمی …