منگل , 15 اکتوبر 2019

نیب نے ملزمان سے بر آمد شدہ 10 کروڑ 73 لاکھ روپے اداروں کو واپس کردیے

لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک) قومی احتساب ادارے (نیب) لاہور نے متعدد ملزمان سے بر آمد کیے گئے 10 کروڑ 73 لاکھ روپے مختلف اداروں کو واپس کردیے۔ یونیورسٹی آف سرگودھا، لاہور ڈیولپمنٹ اتھارٹی، پنجاب ہائی ویز ڈپارٹمنٹ، گجرانوالہ اریگیشن ایمپلائز کو آپریٹو ہاؤسنگ سوسائٹی اور نادرن پاور جنریشن کمپنی لمیٹڈ کو بر آمد کی گئی رقم واپس کی گئی۔

یونیورسٹی آف سرگودھا کے کیا میں وائس چانسلر ڈاکٹر محمد اکرم اور دیگر نے لاہور اور منڈی بہاؤالدین میں اپنے اختیارات کا ناجائز استعمال کرتے ہوئے اور بغیر اجازت طلب کیے 2 غیر قانونی کیمپس کھول رکھے تھے جبکہ طالب علموں سے اضافی فیس وصول کرتے ہوئے انہوں نے 5 کروڑ 90 لاکھ روپے اکٹھے کیے تھے۔نیب کا کہنا تھا کہ ملزمان نے الزام لگایا کہ ملزمان نے انتظامی امور میں 5 کروڑ روپے کی بد عنوانی کی تھی جس کی وجہ سے مجموعی طور پر 10 کروڑ روپے کا نقصان ہوا تھا۔

تحقیقات کے دوران نیب کا کہنا تھا کہ ملزمان نے پلی بارگین کا فیصلہ کیا ہے اور رقم واپس کردی ہے۔انہوں نے بتایا کہ بر آمد کی گئی رقم یونیورسٹی آف سرگودھا کی انتظامیہ تمام طالب علموں کو واپس کرے گی جن سے اضافی فیس وصول کی گئی تھی جبکہ دیگر کو یونیورسٹی انتظامیہ کے حوالے کیا جائے گا۔

یہ بھی دیکھیں

چیئرمین نیب کے تقرر کے خلاف درخواست کی سماعت کیلئے لارجر بینچ تشکیل

لاہور: قومی احتساب بیورو (نیب) کے چیئرمین جسٹس (ر) جاوید اقبال کی تعیناتی اور نیب …