منگل , 22 اکتوبر 2019

افغانستان کو دہشت گردی کے خلاف مہم میں قربانی دینا پڑ رہی ہے، اشرف غنی

کابل (مانیٹرنگ ڈیسک)افغانستان کے صدر اشرف غنی نے امریکہ کے جوائنٹ چیف آف آرمی اسٹاف سے گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ افغانستان، دہشت گردی کے خلاف مہم میں پیش پیش ہے اور اسے اس راہ میں روزانہ قربانی بھی پیش کرنا پڑ رہی ہے۔

صدر افغانستان کے پریس دفتر نے جمعرات کے روز ایک بیان میں اعلان کیا ہے کہ افغانستان کے صدر اشرف غنی نے کابل میں امریکہ کے جوائنٹ چیف آف آرمی اسٹاف جوزف ڈینفرڈ سے گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ دہشت گردی کے خلاف مہم، امن و استحکام کی بحالی اور جنگ کا خاتمہ کرنا ان کی حکومت کی ترجیحات میں شامل ہے۔ انھوں نے کہا کہ دہشت گردی افغان عوام کے لئے ایک بڑا خطرہ ہے جس کے خلاف مہم جاری رکھے جانے کی ضرورت ہے۔

واضح رہے کہ امریکہ کے جوائنٹ چیف آف آرمی اسٹاف جوزف ڈینفرڈ ایک ایسے وقت اچانک افغانستان کے دورے پر دارالحکومت کیابل پہنچے کہ امریکی صدر ٹرمپ کی جانب سے افغان عوام کی توہین کئے جانے کے مسئلے پر کابل اور واشنگٹن کے اختلافات کافی بڑھ گئے ہیں۔

یہ بھی دیکھیں

ترک اور کرد کا ایک دوسرے پر جنگ بندی کی خلاف ورزی کا الزام

انقرہ: شمالی شام میں 5 روزہ جنگ بندی کے اعلان کے باوجود فریقین کی جانب …