منگل , 15 اکتوبر 2019

پاکستان میں 4.5 کروڑ افراد آدھے سر کے درد میں مبتلا

کراچی(مانیٹرنگ ڈیسک) سروے کے مطابق پاکستان میں 4.5 کروڑ افراد آدھے سر کے درد میں مبتلا ہیں اور متاثرہ افراد کی تعداد میں بتدریج اضافہ ہوتا جارہا ہے۔تفصیلات کے مطابق نیورولوجی ریسرچ فاؤنڈیشن کی تحقیق میں یہ بات سامنے آئی ہے کہ پاکستان کا ہر 16واں مرد اور ہر پانچویں خاتون آدھے سرکے درد میں مبتلا ہے اور اس مرض میں تیزی سے اضافہ ہورہا ہے۔ماہرین کے مابق مائی گرین کی بیماری خواتین کے مقابلوں میں مردوں میں زیادہ ہوتی ہے، عام طور پر یہ آدھے سر کا درد 25 سال کی عمر کے افراد میں پایا جاتا ہے۔

مائی گرین میں عام سردرد، جان لیوا سردرد، ذہنی دباؤ، نظام ہاضمہ کی خرابی، پانی کی کمی اور کھانا نہ کھانے سے بھی یہ بیماری لاحق ہوجاتی ہے۔ نیورولوجسٹ ڈاکٹر عبدالمالک کا کہنا تھا کہ آدھے سر کے درد سے ایسا لگتا ہے کہ سر پھٹ جائے گا، اس سے بچاؤ کے لیے نیند، ذہنی دباؤ، اور کھانا صحیح ٹائم پر کھانے سے اس سے بچاجاسکتا ہے۔

درد کے علاج کے لیے مریض دماغ کو قوت دینے والی غذائیں کھائے، بازار سے چاروں مغز لیں اور اس میں 25 گرام بادام اور اخروٹ, 10 گرام ملا کر پیسنے کے بعد دودھ کے ساتھ اس کا حریرہ بنا کر صبح اور شام کے اوقات میں کھائیں۔علاوہ ازیں روغن لبوب صبا جو پانچ تیلوں کا ایک مرکب ہے، یہ بازار میں بآسانی دستیاب ہے، یہ تیل بھی سر میں روزانہ دو مرتبہ لگائیں، اس کے استعمال سے مرض جلد ختم ہوجائے گا۔

یہ بھی دیکھیں

27 فروری کو اپنا ہی ہیلی کاپٹر گرانے والے بھارتی فضائیہ کے افسران کا کورٹ مارشل

نئی دلی: 27 فروری کو اپنے ہی ہیلی کاپٹر کو میزائل سے تباہ کرنے والے …