اتوار , 19 جنوری 2020

گیارہ ستمبر کا ماسٹر مائنڈ سعودی عرب کے خلاف گواہی دینے کو تیار

ریاض (مانیٹرنگ ڈیسک)گیارہ ستمبر کے ماسٹر مائنڈ نے سعودی عرب کے خلاف، وعدہ معاف گواہ بننے پر آمادگی ظاہر کی ہے۔ الجزیرہ ٹیلی ویژن کے مطابق گیارہ ستمبر کے ماسٹرمائنڈ خالد شیخ محمد نے کہا ہے کہ اگر حکومت امریکہ، اسے پھانسی نہ دینے کا وعدہ کرے تو وہ سعودی عرب کے خلاف عدالت میں گواہی دینے کے لیے تیار ہے۔ رپورٹ کے مطابق جمعے کے روز، گیارہ ستمبر کے حملے میں مارے جانے والوں کے اہل خانہ کی جانب سے داخل کیے جانے والے کیس میں سعودی عرب پر اس حملے میں لازمی ہم آہنگی اور سپورٹ فراہم کرنے کا الزام عائد کیا گیا ہے۔ گیارہ ستمبر کے حملے کے ماسٹرمائنڈ خالد شیخ محمد کو سن دو ہزار تین میں پاکستان سے گرفتار کیا گیا تھا۔

دوسری جانب اطلاعات ہیں کہ امریکی صدر ٹرمپ نے گیارہ ستمبر کے واقعے میں ہلاک ہونے والوں کے اہل خانہ کے تاوان کی ادائیگی کے فرمان پر دستخط کر دیئے۔ اس قانون کے تحت گیارہ ستمبر کے واقعے سے متاثر ہونے والے تمام افراد اور ہلاک ہونے والوں کے اہل خانہ، آئندہ تہتر سال تک حکومت سے تاوان کی رقم وصول کرتے رہیں گے۔ گیارہ ستمبر دو ہزار ایک کے واقعے میں تین ہزار سے زائد افراد ہلاک اور چھے ہزار کے قریب افراد زخمی ہوئے تھے۔

یہ بھی دیکھیں

ایرانی صدر سیلاب سے متاثر افراد کی امداد کے لیے صوبہ سیستان و بلوچستان پہنچ گئے

اسلامی جمہوریہ ایران کے صدر حسن روحانی سیلاب سے متاثرہ علاقوں کا دورہ کرنے کے …