جمعرات , 24 اکتوبر 2019

مقبوضہ کشمیر سے متعلق مودی حکومت کا اقدام آئین سے بغاوت ہے :برطانوی ارکان پارلیمنٹ

لندن(مانیٹرنگ ڈیسک)برطانوی ارکان پارلیمنٹ کی جانب سے برطانوی وزیر اعظم بورس جانسن کو خط لکھا گیا ہے جس میں کہا گیاہے کہ مقبوضہ کشمیر سے متعلق مودی حکومت کا اقدام آئین سے بغاوت ہے ۔ ارکان نے اقدام کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ بھارت کی طرف سے شہریوں پر کلسٹر بموں کے استعمال کی خبریں تشویشناک ہیں، تقسیم ہند کے بعد سے بھارت کے زیر انتظام کشمیر مظالم کا شکار رہا ہے ۔

دریں اثنا برطانوی پارلیمنٹ کے رکن اورکل جماعتی پارلیمانی گروپ برائے کشمیر کے سربراہ ڈیبی ابراہمزنے اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل انتونیو گوتریز کے نام ایک خط میں بھارتی آئین کی دفعہ 370کی منسوخی ، جنوبی ایشیا میں بڑھتی ہوئی کشیدگی اور بھارت کی طرف سے نہتے شہریوں کے خلاف کلسٹر بموں کے استعمال پر سخت تشویش کا اظہار کیا ہے ۔ کشمیرمیڈیا سروس کے مطابق انہوں نے اپنے خط میں لکھا کہ ہمیں بھارتی وزیر داخلہ کی طرف سے بھارتی آئین کی دفعہ 370کو منسوخ کرنے کے اعلان پر شدید تشویش ہے ۔

رکن پارلیمنٹ نے اپنے خط میں سیکرٹری جنرل سے کہاکہ عالمی ادارے کی قراردادوں کی روشنی میں بھارتی اقدامات کی قانونی حیثیت کیاہے ؟کیا اقوام متحدہ یکطرفہ بھارتی اقدامات کوروکنے کی کوشش کرے گا ۔ڈیبی ابراہمز نے اپنے خط میں کہا کہ ہم سمجھتے ہیں کہ بین الاقوامی مبصرین کو علاقے میں بھیجنا ضروری ہے ۔ادھر ڈیبی ابراہمز نے برطانیہ میں بھارتی ہائی کمشنر روچی گنشیام کے نام بھی ایک خط ارسال کیا جس میں کہا گیاہے کہ دفعہ 370کی منسوخی کا یکطرفہ بھارتی فیصلہ کشمیری عوام کے ساتھ دھوکہ ہے ۔

یہ بھی دیکھیں

نواز شریف کے پلیٹیلیٹس کی تعداد میں ایک بار پھر تشویشناک حد تک کمی

لاہور: لاہور کے سروسز اسپتال میں زیر علاج سابق وزیراعظم نوازشریف کے پلیٹیلیٹس کی تعداد …