ہفتہ , 6 مارچ 2021

مسلمان خاندان کو ڈزنی لینڈ جانے سے روک دیا گیا

ڈزنی لینڈ دیکھنے کے خواہش مند ایک برطانوی مسلمان خاندان کو امریکا پرواز کرنے سے روک دیا گیا۔امیگریشن حکام نے گزشتہ ہفتے منگل کو لاس اینجلس جانے کیلئے لندن کے گیٹ وک ایئرپورٹ پر موجود ایک مسلمان خاندان کے 11 افراد کو جہاز پر سوار ہونے سے روکا تھا۔اپنے بھائی اور نو بچوں کے ہمراہ روکے جانے والے محمد طارق محمود نے بتایا کہ حکام نے انہیں امریکا جانے سے روکنے کی کوئی وجہ نہیں بتائی
طارق محمود نے روزنامہ گارجین کو بتایا شاید اس کی وجہ یہ ہے کہ امریکی حکام ہر مسلمان کو خطرہ تصور کرتے ہیں۔بی بی سی سے گفتگو میں طارق نے بتایا چونکہ میری داڑھی ہے اور میں کبھی کبھار اسلامی لباس پہنتا ہوں، لہذا اکثر مجھے روک کر سوالات کیے جاتے ہیں۔متاثرہ خاندان اب تک ٹکٹوں کی مد میں خرچ ہونے والے 13400 امریکی ڈالرز بھی واپس حاصل کرنے میں ناکام رہا ہے۔لندن کی مقامی قانون ساز اور مرکزی اپوزیشن لیبر پارٹی کی سٹیلا کریسی نے وزیر اعظم ڈیوڈ کیمرون سے اس معاملے میں مداخلت کی اپیل کی ہیوزیر اعظم ہاوس نے تصدیق کرتے ہوئے بتایا کہ کیمرون سٹیلا کی درخواست کا جواب دیں گے۔لندن میں امریکی سفارت خانے اور برطانوی وزارت خارجہ نے متعدد درخواستوں کے باوجود واقعہ پر کوئی تبصرہ نہیں کیا۔

یہ بھی دیکھیں

شام پر حملہ کرنے والے اسرائیلی میزائل تباہ

شامی فوج نے صوبہ حماہ کی فضا میں اسرائیل کے میزائلی حملوں کو ناکام بنا …