بدھ , 24 جولائی 2019

افغانستان میں جج کو قتل کرنے کے بعد لاش عوامی مقام پر لٹکا دی گئی

542498-afg-1466923051-969-640x480

کابل(مانیٹرنگ ڈیسک) افغانستان کے صوبے فراح میں نامعلوم افراد نے حاضر سروس جج کو قتل کرنے کے بعد لاش سرعام بازار میں لٹکا دی۔غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق تین روز قبل اغوا ہونے والے سیشن کورٹ کے جج کو نامعلوم افراد نے قتل کرنے کے بعد ان کی لاش عوامی مقام پر لٹکا دی۔ صوبہ فراح کے گورنر کے ترجمان نصیر مہری کا کہنا ہے کہ نامعلوم افراد نے 23 جون کو سیشن کورٹ کے جج کو اغوا کیا تھا جس کے بعد انہیں خاک و سفید ضلع میں فائرنگ کر کے قتل کیا اور ان کی لاش عوامی مقام پر لٹکا دی۔ترجمان گورنر کا کہنا تھا کہ اب تک کسی گروپ کی جانب سے قتل کی ذمہ داری قبول نہیں کی گئی تاہم واقعے کی تحقیقات کا آغاز کردیا گیا ہے جب کہ خاک و سفید ضلع میں طالبان کا اثر و رسوخ ہے جہاں طالبان کے نئے امیر کے انتخاب کے بعد سے سڑک کنارے بم دھماکوں میں تیزی آئی ہے۔واضح رہے کہ گزشتہ ماہ عدالت کی جانب سے 4 افغان جنگجوؤں سمیت 6 افراد کو پھانسی دیئے جانے کے حکم کے بعد طالبان نے دھمکی دی تھی کہ عدالتی حکام کو اس کا جواب دیا جائے گا۔

یہ بھی دیکھیں

اب افغانستان میں امن کا ‘صحیح وقت’ ہے، اشرف غنی

کابل (مانیٹرنگ ڈیسک)افغانستان کے صدر اشرف غنی نے کہا ہے کہ اب افغانستان میں امن …