ہفتہ , 7 دسمبر 2019

امریکا نے تائیوان کو 8 ارب ڈالر مالیت کے 66 ایف 16طیاروں کی فروخت کی منظوری دیدی

واشنگٹن (مانیٹرنگ ڈیسک)امریکا نے تائیوان کو 8 ارب ڈالر مالیت کے 66 ایف 16طیاروں کی فروخت کی منظوری دیدی۔غیر ملکی میڈیا کے مطابق امریکی محکمہ خارجہ نے بھی تائیوان کو ایف 16 طیاروں کی فروخت کی تصدیق کر دی ہے۔تائیوان کو ایف سولہ طیاروں کی منظوری سے قبل امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے سوشل میڈیا پر بیان دیا کہ کسی نہ کسی نے تو چین کو کنٹرول کرنا تھا۔امریکی محکمہ خارجہ کے مطابق تائیوان کو 8 ارب ڈالر مالیت کے لاک ہیڈ مارٹن کے طیار کردہ جدید ترین ایف 16 جنگی طیارے فراہم کیے جائیں گے۔

امریکی وزیر خارجہ مائیک پومپیو نے اپنے بیان میں کہا ہے کہ تائیوان کے ساتھ ایف 16 طیاروں کا معاہدہ چین کے ساتھ تاریخی تعلقات کے عین مطابق ہے۔مائیک پومیو نے مزید کہا کہ ہمارا اقدام گزشتہ پالیسیوں کا تسلسل ہے جو ہم نے اپنے اتحادیوں کے ساتھ کر رکھا ہے۔تائیوان کے صدارتی ترجمان کا اس حوالے سے کہنا ہے کہ امریکی ایف 16 طیاروں سے ملکی دفاعی صلاحیتوں میں اضافہ ہو گا۔ترجمان تائیوان صدر نے مزید کہا کہ امریکی طیارے خلیج تائیوان اور خطے میں امن و استحکام کے لیے مرکزی کردار ادا کریں گے۔

امریکی سینیٹ کی بین الاقوامی تعلقات کی کمیٹی کے چیئرمین جم رچ نے ٹرمپ انتظامیہ کے فیصلے کو خوش آئند قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ چین کے بڑھتے ہوئے دباؤ کے پیش نظر یہ طیارے تائیوان کی فضائی حدود کی حفاظت کے لیے بہت ضروری ہیں۔امریکا کی غیر ملکی ملٹری فروخت کا جائزہ لینے والی دفاعی سلامتی ایجنسی کا کہنا ہے کہ تائیوان کو ایف سولہ طیاروں کی فروخت خطے میں بنیادی فوجی توازن تبدیل نہیں ہو گا۔چین کا دعویٰ ہے کہ تائیوان ان کی ملکیت ہے اور اسے بیجنگ کے ساتھ ملنا ہے جب کہ تائیوان خود کو ایک خود مختار علاقہ تصور کرتا ہے اور امریکا کا قریبی اتحادی ہے۔

یہ بھی دیکھیں

‘داعش’ نے اجتماعی قتل عام اور قیدیوں کو ذبح کرنے کا بھیانک سلسلہ پھر شروع کردیا

‘داعش’ نے اجتماعی قتل عام اور قیدیوں کو ذبح کرنے کا بھیانک سلسلہ پھر شروع …