ہفتہ , 21 ستمبر 2019

ایران یک طرفہ طور پر ایٹمی معاہدے کی پابندی کا سلسلہ جاری نہیں رکھ سکتا، صدر حسن روحانی

تہران (مانیٹرنگ ڈیسک)صدر مملکت حسن روحانی نے ایٹمی معاہدے پر عملدرآمد کی سطح میں کمی کے فیصلے کا دفاع کرتے ہوئے کہا کہ فریق مقابل کی وعدہ خلافیوں کو ہر گز برداشت نہیں کیا جاسکتا۔بدھ کو قائد اسلامی انقلاب حضرت آیت اللہ خامنہ ای کے ساتھ ملاقات کے موقع پر صدر حسن روحانی کا کہنا تھا کہ فریق مقابل کی وعدہ خلافیوں کے جواب میں ایٹمی معاہدے پر عملدرآمد کی سطح میں کمی فیصلہ درست ہے۔

صدر نے ایک بار پھر اپنی حکومت کے اس موقف کا اعادہ کیا کہ ایران یک طرفہ طور پر ایٹمی معاہدے کی پابندی کا سلسلہ جاری نہیں رکھ سکتا۔انہوں نے ایٹمی معاہدے کے باقی ماندہ فریقوں کے ساتھ جاری مذاکرات کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ اگر مذاکرات ناکام رہے تو ایران ایٹمی معاہدے پر عملدرآمد کی سطح میں مزید کمی کردے گا۔

صدر ایران کا کہنا تھا کہ عالمی طاقتوں کو اچھی طرح جان لینا چاہیے کہ ایرانی تیل کی فروخت پر مکمل پابندی اور برآمدات صفر ہونے کی صورت میں بین الاقوامی آبی گزرگاہیں پہلے کی طرح محفوظ نہیں رہیں گی۔انہوں نے کہا کہ ایران کے خلاف یک طرفہ دباؤ خود دباؤ ڈالنے والوں کے مفاد میں نہیں اور اس سے ان کی اور دنیا کی سلامتی میں کوئی مدد نہیں ملے گی۔

یہ بھی دیکھیں

دشمن یمنی فوج کے انتباہ آمیز جواب سے سبق لیں اور یمن جنگ کو ختم کریں، صدر حسن روحانی

تہران (مانیٹرنگ ڈیسک)اسلامی جمہوریہ ایران کے صدر ڈاکٹر حسن روحانی نے کہا ہے کہ علاقے …