منگل , 13 اپریل 2021

چین نے امریکہ کو جزیرہ تائیوان کو اسلحے کی فروخت کی بابت خبردار کر دیا

بیجنگ (مانیٹرنگ ڈیسک)چین کی وزارت دفاع کے ترجمان نے امریکہ کو جزیرہ تائیوان کو اسلحے کی فروخت کی بابت خبردار کیا ہے۔ارنا کی رپورٹ کے مطابق چینی وزارت دفاع کے ترجمان رن گوا چینگ نے بیجنگ میں ایک انٹرویو میں کہا کہ امریکہ، تائیوان کو اسلحے کی ترسیل کے نتائج کا ذمہ دار ہے اور اسے اس اقدام کے نتائج قبول کرنا پڑیں گے۔ چین کی وزارت دفاع کے ترجمان نے کہا کہ حزیرہ تائیوان کو امریکہ کی جانب سے اسلحے کی فروخت، چین کے داخلی امور میں واشنگٹن کی سنجیدہ مداخلت شمار ہوتی ہے اور یہ متحدہ چین کے اصول کے منافی ہے۔

رن گوا چینگ نے تاکید کے ساتھ کہا کہ واشنگٹن کو جزیرہ تائیوان کو دوارب ڈالر کے اسلحے کی فروخت کو فورا روک دینا چاہئے۔ بیجنگ نے اس سے پہلے بھی امریکہ کو خبردار کیا تھا کہ اگر وہ تائیوان کو جنگی طیارے بیچےگا تو اسے چین کے جوابی اقدام کا سامنا کرنا پڑے گا۔حکومت امریکہ نے جزیرہ تائیوان کی ساٹھ سے زیادہ ایف سولہ جنگی طیاروں کی خریداری کی درخواست منظور کر لی ہے۔ حکومت چین نے بارہا اعلان کیا ہے کہ وہ تائیوان کی خودمختاری قبول نہیں کرے گا۔چین ، تائیوان کو اپنا اٹوٹ حصہ سمجھتا ہے۔

یہ بھی دیکھیں

ایران و چین معاہدے پر امریکہ چراغ پا

امریکی صدر نے ایران اور چین کے 25 سالہ معاہدے پر سخت تشویش کا اظہار …