منگل , 4 اگست 2020

اسرائیل کی ‘سائبر یونٹ 8200’ کا اسرائیل کی جاسوسی میں کردار!

یروشلم (مانیٹرنگ ڈیسک)ٹیکنالوجی کی ترقی خاص طور پر مواصلاتی ٹیکنالوجی نے بہت سارے معاشرتی اور معاشی فوائد لائے ہیں لیکن اس کے ساتھ ساتھ بہت سے نئے چیلنجوں کا سامنا کرنا پڑا ہے جس نے سائبر جاسوسی کو فروغ دینے کا موقع بھی فراہم کیا۔’زیتونہ سینٹر فار اسٹڈیز اینڈ وکنسلٹنسی’ نے فلسطین کے امور میں ماہر خصوصی مرکز کی ایک محقق پروفیسر فاطمہ اتانی کا ایک ریفریڈ سائنسی مضمون جاری کیا ، جس کا عنوان "اسرائیلی یونٹ 8200 اور اسرائیلی جاسوس ٹیکنالوجی کی خدمت میں اس کا کردار۔” رکھا گیا۔

اس مطالعے میں صہیونی انٹیلیجنس سرگرمی کے تاریخی پس منظر پر روشنی ڈالنے کی کوشش کی گئی ۔ خاص طور پراسرائیلی ملٹری انٹلیجنس یونٹ 8200 کے ابھرتے ہوئےتکنیکی جاسوسی کے میدان میں مہارت حاصل ہے۔ کچھ لوگ ٹیکنالوجی جاسوسی کو ریاست ہائے متحدہ امریکا کی قومی سلامتی کے ایجنسی کے متوازی دیکھتے ہیں۔

یہ بھی دیکھیں

عالم اسلام میں عید الاضحیٰ جوش و خروش کے ساتھ منائی جا رہی ہے

اسلامی جمہوریہ ایران کے ساتھ ساتھ آج مختلف ممالک میں بھی، یادگار خلیل خدا، عید …