بدھ , 23 اکتوبر 2019

امریکہ میں قید ایرانی سائنسدان کی رہائی کا مطالبہ

واشنگٹن (مانیٹرنگ ڈیسک)امریکہ میں گرفتارایرانی سائنسدان کے اہل خانہ نے ان کی رہائی کا مطالبہ کیاہے.ایرانی سائنسدان مسعود سلیمانی کے بھائی اور بہن نے گزشتہ روز صحافیوں کے ساتھ گفتگو کرتے ہوئے امریکہ میں قید نامور ایرانی محقق، پروفیسر اور سائنسدان مسعود سلیمانی کی رہائی کے لیے مزید کوششوں کا مطالبہ کیا.

مسعود سلیمانی کے بھائی نے پروفیسر مسعود سلیمانی کی تازہ ترین صورتحال پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ ان کی جسمانی حالت اچھی نہیں ہے اور اب تک انہوں نے تقریبا 15 کلوگرام وزن کم کیا ہے اور بینائی اور نفسیاتی مسائل و مشکلات سے دوچار ہے۔

یاد رہے کہ 22اکتوبر 2018 کو مسعود سلیمانی ایک سائنسدان کی حیثیت سےامریکہ اور دنیا کے مشہور مائیو کلینک(Mayo Clinic) ایڈمی کی دعوت پر ویزا لے کر امریکہ روانہ ہوئے تاہم شکاگو کے ہوائی اڈے پر گرفتار کر کے جیل میں ڈال دیا گیا اور جیل میں انھیں عام قیدیوں کے بیرک میں اسمگلروں اورخطرناک مجرموں کے ساتھ رکھاگیا ہے۔

یہ بھی دیکھیں

امریکی فوجیوں کو عراق میں ٹھہرنے کا کوئی حق نہیں

بغداد: امریکی فوج کو شام سے خارج ہوکرعراق میں ٹھہرنے کا کوئی حق نہیں ہے۔ …