جمعرات , 24 اکتوبر 2019

سعودی عرب حملوں میں عراقی سرزمین کے استعمال کی تردید

بغداد(مانیٹرنگ ڈیسک) حکومت عراق نے سعودی تیل کی تنصیبات پر کیے جانے والے ڈرون حملوں میں عراقی سرزمین کے استعمال سے متعلق خبروں کو سختی کے ساتھ مسترد کردیا ہے۔عراقی وزیر اعظم کے دفتر سے جاری ہونے والے بیان میں کہا گیا ہے کہ بغداد حکومت اپنی سرزمین کو کسی بھی ہمسایہ ملک کے خلاف استعمال کرنے کی ہرگز اجازت نہیں دے گی۔بیان میں آیا ہے کہ عراقی آئین میں ہمسایہ ملکوں کے خلاف حملے کی ممانعت کی گئی ہے اور ایسا کرنے والوں کے خلاف سخت کارروائی کی جائے گی۔

حکومت عراق کا کہنا ہے کہ سعودی تیل کی تنصیبات پر حملے سے متعلق افواہیں پھیلانے کے معاملات کا جائزہ لینے کے لیے کمیٹی بھی تشکیل دے دی گئی ہے۔بیان میں کہا گیا ہے کہ خطے میں کشیدگی اور فوجی محاذآرائی میں شدت کی صورت میں خطے اور دنیا کی سلامتی کے لیے خطرات میں اضافہ ہوگا اور انسانی صورتحال مزید پیچیدہ ہوجائے گی۔قابل ذکر ہے کہ امریکی ٹی وی چینل سی این این نے دعوی کیا ہے کہ سعودی عرب کی تیل کی تنصیبات پر یمنی فوج اور عوامی رضاکار فورس کے حالیہ ڈرون حملے میں عراق کی سرزمین کا استعمال کیا گیا ہے۔

یہ بھی دیکھیں

امریکی فوجیوں کو عراق میں ٹھہرنے کا کوئی حق نہیں

بغداد: امریکی فوج کو شام سے خارج ہوکرعراق میں ٹھہرنے کا کوئی حق نہیں ہے۔ …