بدھ , 23 اکتوبر 2019

وادی اردن سے متعلق اسرائیلی اعلان پر ‘او آئی سی’ کا ہنگامی اجلاس

جدہ (مانیٹرنگ ڈیسک)سعودی عرب کی درخواست پر اسلامی تعاون تنظیم (او آئی سی) کا آج اتوار کے روز وزرائے خارجہ سطح کا ہنگامی اجلاس جدہ میں ہو رہا ہے جس میں فلسطین کے مقبوضہ وادی اردن کو اسرائیل میں ضم کرنے کے اسرائیلی اعلان پرغور اور آئندہ کا لائحہ عمل طے کیا جائے گا۔

ترکی کی وزارت خارجہ نے کہا ہے کہ اسلامی تعاون کی تنظیم او آئی سی کا ہنگامی اجلاس قابض اسرائیلی ریاست کے وزیراعظم بنجمن نیتن یاھو کے اس بیان کے بعد بلایا گیا ہے جس میں انہوں نے کہا تھا کہ وہ کنیسٹ کےانتخابات کے فوری بعد نئی حکومت قائم کرتے ہی وادی اوردن اور شمالی بحر مردار کو اسرائیل میں ضم کرنے کا اعلان کریں گے۔

ترکی کی وزارت خارجہ نے ایک بیان میں کہا ، "او آئی سی ، جدہ میں ایک اجلاس منعقد کرے گی جس میں نیتن یاہو کے وادی اردن کو صہیونی ریاست میں شامل کرنے،مغربی کنارے کی یہودی کالونیوں کو اسرائیل کا حصہ بنانے کے اعلان پرغور کیا جائےگا۔

نیتن یاھو نے ، جو منگل کے روز انتخابی مہم چلا رہے تھے نے اعلان کیا کہ وہ "وادی اردن اور بحیرہ مردار کے شمالی علاقے پر اسرائیلی خودمختاری قائم کرنے کا ارادہ رکھتے ہیں” ، انہوں نے مزید کہا کہ اگر اگلے انتخابات میں انہیں انہیں کامیابی ملتی ہے تو وہ اقدام کو "فوری طور پر” لاگو کریں گے۔

یہ بھی دیکھیں

شام کے صدر کا ادلب کے اگلے محاذوں کا دورہ

ادلب: شام کے صدر بشار اسد نے ادلب کے محاذ کو اپنے ملک میں جاری …