جمعہ , 6 دسمبر 2019

جنگ کے خطرات کے سائے میں چین اور ایران کی تاریخی ڈیل

بیجنگ (مانیٹرنگ ڈیسک)ایک ایسے وقت میں جب مشرق وسطیٰ میں جاری کشیدگی اور سعودیہ کے تیل تنصیبات پر رواں ہفتے ہونے والے حملوں کے بعد جنگ کے بادل منڈلا رہے ہیں، چین اور ایران نے ایک نیا اور غیرمعمولی معاہدے پردستخط کیے ہیں۔فارس نیوز ایجنسی نے تہران چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے نمائندوں کے ایک ممبر کے فریال مستوفی کے حوالے سے بتایا کہ ایران اور چین نے 400 ارب ڈالر کے معاہدوں پر دستخط کیے ہیں۔

مستوفی نے منگل کے روز تہران کے چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے نمائندوں کے اجلاس کے دوران کہا کہ چینی کمپنیوں کو بغیر کسی ٹینڈروں کے ایران میں منصوبوں میں حصہ کی اجازت دی گئی ہے۔

خیال رہے کہ گذشتہ سال اگست میں امریکا نے ایران پر اقتصادی پابندیاں عاید کرتے ہوئے عالمی کمپنیوں پر بھی پابندی عاید کردی تھی کہ وہ ایران میں مختلف ٹھیکوں کے ٹینڈرز میں شامل نہیں ہوں گی۔ ایرانی عہدیدار کا کہنا ہے کہ چینی کمپنیوں کو بغیر ٹینڈر کے ٹھیکے جاری کرنا امریکی پابندیوں کارد عمل ہے۔انہوں نے کہا کہ ایران اپنے اتحادی چین کو 20 سے 30 فی صد کم نرخوں پر تیل فروخ کرے گا۔

ایران اور چین میں چار کھرب ڈالر کے معاہدے کے بعد بیجنگ اور واشنگٹن کے مابین تجارتی جنگ کے محاذ پر شدت آنے اور امریکا کی طرف سے ایران میں سرمایہ کاری پر مزید پابندیوں کا امکان موجود ہے۔

یہ بھی دیکھیں

پاکستان میں پولیو کیسز کی تعداد 2015 کے بعد بلند ترین سطح پر پہنچ گئی

(اسلام آباد) سندھ اور خیبر پختونخوا میں پولیو کے مزید 3 کیسز سامنے آگئے جس …