جمعرات , 21 نومبر 2019

ٹویٹر کا سیاسی اشتہارات پر پابندی کا اعلان

سان فرانسسکو: سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر نے پیسوں کے عوض سیاسی اشتہارات چلانے پر پابندی عائد کرنے کا اعلان کیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر نے سیاسی اشتہارات پر پابندی عائد کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ ٹویٹر پر سیاسی اشتہار بازی پر پابندی 22 نومبر سے نافذ العمل ہوگی جبکہ ٹویٹر کی اس نئی پالیسی کے حوالے سے مکمل تفصیلات 15 نومبر تک دستیاب ہوں گی۔

ٹویٹر کے سی ای او جیک ڈورسی نے اپنے پیغام میں کہا کہ اگرچہ انٹرنیٹ پر اشتہار بازی کاروباری طبقے کے لیے ناقابل یقین حد تک طاقتور اور موثر ہے لیکن ایسی طاقت سیاست کے لیے خطرات کا باعث بنتی ہے۔

https://twitter.com/jack/status/1189634360472829952

جیک ڈورسی نے کہا کہ انٹرنیٹ پر سیاسی اشتہارات عوامی بحث ومباحثے کے لیے مکمل طور پر نئے چیلنجز پیدا کر رہے ہیں، ان چیلنجز میں گمراہ کن اور غیر مصدقہ اطلاعات بھی شامل ہیں۔

سنہ 2016 میں ہوئے امریکی صدارتی انتخابات میں ڈونلڈ ٹرمپ سے شکست کھانے والی ڈیموکریٹک امیدوار ہیلری کلنٹن نے اس پابندی کا خیر مقدم کرتے ہوئے فیس بک کو بھی اس پالیسی پر عمل پیرا ہونے کا مشورہ دیا ہے۔

خیال رہے کہ حال ہی میں ٹویٹر کی حریف ویب سائیٹ فیس بک نے اپنے پلیٹ فارم پر سیاسی اشتہاروں پر پابندی کے امکان کو مسترد کیا تھا۔

یہ بھی دیکھیں

اندھیرے میں چمکنے والی سولر جیکٹ تیار

برطانوی ماہرین نے ایسی انوکھی جیکٹ تیار کرلی ہے جو سورج کی توانائی سے چارج …