جمعہ , 13 دسمبر 2019

اٹلی کے بعد ملائیشیا بھی سیاحت کے شعبے میں تعاون پر تیار، معاہدے کا امکان

اسلام آباد : پاکستان اور ملائیشیا میں سیاحتی شعبے میں تعاون کےمعاہدے کا امکان ہے، اس سلسلے میں وزیراعظم معاون خصوصی زلفی بخاری ملائیشیاکااہم دورہ کریں گے۔

تفصیلات کے مطابق وزیراعظم عمران خان کی پاکستان میں سیاحت کے فروغ کی کوششیں رنگ لے آئیں ، اٹلی کے بعد ملائیشیا بھی سیاحت کے شعبے میں تعاون پر تیار ہے۔

پاکستان اور ملائیشیا میں سیاحتی شعبے میں تعاون کے معاہدے کا امکان ہے، اس سلسلے میں وزیراعظم معاون خصوصی زلفی بخاری ملائیشیا کا اہم دورہ کریں گے۔

دورے سے قبل زلفی بخاری کی وزیراعظم عمران خان سے ملاقات ہوئی ، جس میں وزیراعظم کو ملائیشیا اور قطر کے دوروں پر بریفنگ دی گئی اور سیاحت کے فروغ، اوورسیز پاکستانیوں کے لئے ممکنہ معاہدوں سے بھی آگاہ کیا اور کہا گیا کہ قطر کیساتھ اوورسیز پاکستانیوں کو درپیش مسائل کا معاملہ بھی اٹھایا جائے گا۔

یاد رہے گذشتہ روز اٹلی نے پاکستانی سیاحت کے فروغ کے لیے تکنیکی معاونت فراہم کرنے کی پیشکش کی تھی ، زلفی بخاری سے پاکستان میں تعینات اطالوی سفیر نے خصوصی ملاقات ہوئی تھی۔

اس موقع پر اطالوی سفیر کا کہنا تھا کہ موجودہ حکومت سیاحت کے فروغ کے لیے سنجیدہ اقدامات کررہی ہے، اٹلی پاکستان میں سیاحتی منصوبوں میں تعاون کا خواہاں ہے، دوطرفہ تعلقات کی مضبوطی کے لیے مزید اقدامات کریں گے۔

دریں اثنا زلفی بخاری نے کہا تھا کہ سیاحت کا شعبہ وزیر اعظم کے دل کے بہت قریب ہے، سیاحت کے فروغ کے لیے اہم اور بڑے فیصلے کیے ہیں، برانڈ پاکستان کی تشکیل کا کام بھی جلد مکمل ہوجائے گا، سیاحتی ترقی سے ملکی معیشت میں 20ارب ڈالر کا اضافہ ہوگا۔

ان کا کہنا تھا کہ اٹلی شمالی علاقوں میں سیاحتی سرگرمیاں بڑھانے کی تیاری شروع کردے، کرتارپورکوریڈور پاکستان میں مذہبی سیاحت کے فروغ کی اہم کڑی ہے، کرتارپور کے اقدام سے دنیا میں پاکستان کا مثبت تشخص سامنے آیا۔

یہ بھی دیکھیں

اسرائیلی پارلیمنٹ تحلیل، 2 مارچ کو دوبارہ انتخابات

تل ابیب: اسرائیلی پارلیمنٹ نیسٹ تحلیل کر دی گئی اس طرح اب گزشتہ ایک سال …