ہفتہ , 18 جنوری 2020

سیمنٹ ،چینی سمیت بڑے سیکٹرز پر نگرانی نظام نافذ کرنیکا فیصلہ

پیداواراورفروخت کے اعداد وشمار کم ظاہرکرنے کی روک تھام،ایکسائزڈیوٹی وسیلزٹیکس ادائیگی یقینی بنائی جائے گی ،لائسنسز کی بولی کے لیے تمام انتظامات مکمل کرلیے گئے لائسنسوں کے اجرا کیلئے ہدایات ا سٹیک ہولڈرز سے مشاورت کے بعدآئندہ ماہ مشتہر کردی جائیں گی،فیصلہ سازی کیلئے مختلف اجلاس منعقد کیے جارہے ہیں ،ایف بی آراسلام آباد(خبرنگارخصوصی)ایف بی آر نے سگریٹ کے بعد سیمنٹ، چینی، کھاد اور مشروبات جیسے بڑے سیکٹرز کی پیداوار اور درآمدات کو جانچنے کیلئے ٹریک اینڈ ٹریس نظام لانے کا فیصلہ کیا ہے ۔ ایف بی آر کے اعلامیہ کے مطابق اس سسٹم کے ذریعے پیداوار اور فروخت کے اعداد وشمار کم ظاہر کرکے ریونیو کے خسارہ کی روک تھام اور مخصوص اشیا ومصنوعات پر لاگو فیڈرل ایکسائز ڈیوٹی وسیلز ٹیکس کی ادائیگی کو یقینی بنایا جائے گا۔ ان چاروں سیکٹرز کیلئے ٹریک اینڈ ٹریس نظام کے لائسنسز کی بولی کیلئے تمام انتظامات مکمل کرلیے گئے ہیں۔لائسنسز کے اجرا کیلئے ہدایات جنوری 2020 میں تمام بڑے سیکٹرز اورا سٹیک ہولڈرز سے مشاورت کے بعد مشتہر کردی جائیں گی۔ اس ضمن میں بہتر فیصلہ سازی کیلئے ایف بی آر تمام اسٹیک ہولڈرز کی آرا حاصل کرنے کیلئے مختلف اجلاس منعقد کرے گا، اس سلسلے میں 2 اور 5 دسمبر کو سیمنٹ مینوفیکچررز سے پہلی اور دوسری میٹنگ ہوئی، تیسری میٹنگ 12 دسمبر کو ہوگی۔

یہ بھی دیکھیں

رواں مالی سال کے پہلے 5 ماہ میں قرضوں کے حجم میں 344 ارب روپے کا اضافہ

کراچی: رواں مالی سال کے پہلے 5 ماہ میں قرضوں کے حجم میں 344 ارب …