جمعہ , 17 جنوری 2020

امریکہ کو شہریت ترمیمی بل پر بولنے کا حق نہیں: ہندوستان

  • امریکہ کو شہریت ترمیمی بل پر بولنے کا حق نہیں: ہندوستان

ہندوستان میں متنازع شہریت ترمیمی بل کی منظوری کے خلاف احتجاج اور مخالفت کا سلسلہ جاری ہے۔

ہندوستان نے شہریت ترمیمی بل کے بارے میں امریکہ کے بین الاقوامی مذہبی آزادی کمیشن (یوایس سی آئی آرایف ) کے تبصرے کو  یہ کہہ کر مسترد کر دیا کہ اسے اس معاملے میں بولنے کا کوئی حق نہیں ہے اور اس کا تبصرہ تعصب پر مبنی ہے۔

ہندوستان کی وزارت خارجہ کے ترجمان رویش کمار کا کہنا تھا کہ یوایس سی آئی آر ایف کی طرف سے کئے گئے تبصرے سے ہمیں کوئی حیرانی نہیں ہوئی اس لئے کہ اس کا گزشتہ ریکارڈ بھی ایسا ہی رہا ہے اور اسے کوئی معلومات نہیں ہے اور اس پر اسے بولنے کا حق بھی نہیں ہے۔

رویش کمار نے کہا کہ امریکہ سمیت ہر ملک کو شہریت کی جوازیت کو یقینی بنانے اور اس سلسلے میں مختلف پالیسیوں کے ذریعے نافذ کرنے کا حق ہے۔ ہندوستان کے شہریت ترمیمی بل پر یوایس سی آئی آر ایف کا تبصرہ نہ تو درست ہے اور نہ ہی خیرمقدم کے قابل ہے۔

واضح رہے کہ یوایس سی آئی آر ایف امریکہ کی وفاقی حکومت کا کمیشن ہے جو 1998 کے بین الاقوامی مذہبی آزادی قانون کے تحت قائم کیا گیا تھا۔

یہ بھی دیکھیں

ایرانی وزیر خارجہ بھارتی فورم رائے سینا ڈائیلاگ میں شریک ہوں گے

دہلی:  رائے سینا دائیلاگ فورم کی بین الاقوامی  کانفرنس کا 14 سے 16 جنوری تک …