پیر , 21 ستمبر 2020

گوجرانوالہ میں پہلی ماس ریسلنگ چیمپئن شپ میں چاروں صوبے شریک

گوجرانوالہ میں پہلی بار ماس ریسلنگ چیمپئن شپ کا انعقاد کیا گیا جس میں چاروں صوبوں سے شریک مرد وخواتین ریسلرز نے ٹانگوں اور بازوؤں کے زور سے حریف سے چھڑی چھیننے کے لیے داؤ پیچ آزمائے۔

گوجرانوالہ میں ہونے والی نیشنل ماس ریسلنگ کے مقابلوں کا آغاز چاروں صوبوں سمیت مختلف ریجن سے آئی ٹیموں نے مارچ پاسٹ کرتے ہوئے کیا، ساتھ ہی کرغستان سے آئی ننھی لڑکی نے رقص کر کے سماں باند ھ دیا۔

مرد کھلاڑیوں نے ایک دوسرے سے خوب زور آزمائی کرتے ہوئے اپنی مہارت اور جسمانی صلاحیتوں کے جوہر دکھاتے اور چھڑی چھیننے کے لیے خوب داؤ پیچ آزما ئے۔

مقابلوں میں خواتین کھلاڑیوں نے بھی بھرپور حصہ لیتے ہوئے ایک دوسرے سے خوب زور آزمائی کی۔

گوجرانوالہ ڈویژن کی ٹیم نے 9 گولڈ میڈلز کے ساتھ ماس ریسلنگ کا میدان مار لیا جب کہ پنجاب 2 میڈل کے ساتھ دوسری اور بہاولپور کی ٹیم ایک میڈل کے ساتھ تیسری پوزیشن حاصل کر سکی۔

ماس ریسلنگ میں شریک کھلاڑیوں کا کہنا تھا کہ حکومت دوسرے کھیلوں کی طرح اس کھیل پر توجہ دے تو کھلاڑی انٹر نیشنل مقابلوں میں حصہ لے کر اپنے ملک کا نام روشن کر سکتے ہیں۔

یہ بھی دیکھیں

پی سی بی اور سلیم ملک کی قانونی لڑائی مزید طویل

لاہور: پی سی بی اور سلیم ملک کے درمیانی قانونی لڑائی مزید طویل ہوگئی جب …