اتوار , 9 اگست 2020

قانون کو ہاتھ میں لینے والے وکلا کو بخشا نہیں جائے گا: وزیر قانون پنجاب

  • قانون کو ہاتھ میں لینے والے وکلا کو بخشا نہیں جائے گا: وزیر قانون پنجاب

لاہور کے امراض قلب پر وکلاء کے حملے کے باعث 6 مریض جاں بحق ہو گئے۔

پاکستانی میڈیا کے مطابق وزیراطلاعات پنجاب فیاض الحسن چوہان، صوبائی وزیرصحت یاسمین راشد کے ہمراہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے وزیرقانون پنجاب راجہ بشارت کا کہنا تھا کہ آج کا واقعہ انتہائی افسوسناک ہے۔

صوبائی وزیرقانون راجہ بشارت کا کہنا تھا کہ واقعے کی قانون کے مطابق تحقیقات ہوگی، واقعے کی دو سطح پرانکوائری ہو رہی ہے، پولیس کی کوتاہی کو بھی دیکھا جا رہا ہے، کچھ شرپسند وکلا کی شناخت ہوچکی ہے، قانون کو ہاتھ میں لینے والے وکلا کو نہیں بخشا نہیں جائے گا اور کسی وکیل کے ساتھ کوئی رعایت نہیں کی جائے گی۔

واضح رہے کہ کل لاہور میں وکلاء اور ڈاکٹرز کے درمیان تنازع شدت اختیار کرگیا، مشتعل وکلاء کی بڑی تعداد پنجاب انسٹیٹیوٹ آف کارڈیالوجی کے آئی سی یو اور آپریشن تھیٹر میں داخل ہوگئی اور توڑ پھوڑ کی تاہم اس دوران اسپتال کا عملہ اور ڈاکٹرز بڑی مشکل سے جان بچا کر باہر نکلنے میں کامیاب ہوئے، اس کے علاوہ وکلاء نے پی آئی سی میں کھڑی گاڑیوں کو بھی نقصان پہنچایا جب کہ اسپتال کے باہر کھڑے پولیس اہلکاروں نے بھی وکلاء کو توڑ پھوڑ سے نہ روکا۔

اسپتال میں وکلاء کی توڑ پھوڑ کے بعد پی آئی سی ملازمین اور وکلا میں تصادم بھی دیکھنے کو ملا اور وکلاء نے پولیس گاڑی کو آگ لگا دی تاہم صورتحال مزید خراب ہونے پر پولیس کی جانب سے مشتعل وکلاء کو منتشر کرنے کے لیے لاٹھی چارج اور آنسو گیس کا استعمال کیا گیا۔

اسپتال ذرائع کے مطابق وکلاء کے حملے کے باعث طبی امداد نہ ملنے پر اسپتال میں زیر علاج 6 مریض دم توڑ گئے ۔

پنجاب انسٹیٹیوٹ آف کارڈیالوجی میں وکلاء کی جانب سے ڈاکٹرز اور مریضوں پر تشدد کے خلاف ینگ ڈاکٹرز نے جمعرات کے روز سے او پی ڈیز بند کرنے کا اعلان کردیا ہے۔

یہ بھی دیکھیں

بھارت نے مقبوضہ کشمیر کی خصوصی حیثیت ختم کرکے آئینی دہشت گردی کی، راجا فاروق

مظفر آباد: آزاد جموں و کشمیر کے وزیر اعظم راجا فاروق احمد نے کہا ہے …