منگل , 28 جنوری 2020

وکلاء کی کراچی میں بھی ڈاکٹروں کو اسپتال میں گُھس کر مارنے کی دھمکی

لاہور کے پنجاب انسٹی ٹیوٹ آف کارڈیالوجی (پی آئی سی) میں حملہ کرنے والے وکلاء کی غنڈہ گردی کے بعد اب کراچی کے وکلاء نے بھی اپنے کالے کوٹ والے بھائیوں کی حمایت کرتے ہوئے ڈاکٹروں پر حملہ کرنے کی دھمکی دے دی۔

تین روز قبل ایک ویڈیو وائرل ہونے کے ردعمل میں وکلاء کی جانب سے لاہور میں پی آئی سی پر حملہ کر کے توڑ پھوڑ کی گئی تھی اور اس ہنگامہ آرائی کے دوران ایک خاتون سمیت 3 مریض انتقال کر گئے تھے۔

پی آئی سی میں ہنگامہ آرائی اور توڑ پھوڑ کے الزام میں وکلاء سے زائد وکلاء کو گرفتار بھی کیا جا چکا ہے جن کی رہائی کے لیے وکلاء تنظیموں کی جانب سے ملک بھر میں عدالتی کارروائی کا بائیکاٹ کیا جا رہا ہے اور احتجاجی مظاہرے بھی کیے جا رہے ہیں۔اس تمام تر صورت حال کے بعد اب کراچی کے وکلاء نے بھی متحد ہو کر  ڈاکٹرز  پر حملہ کرنے کی دھمکی دی ہے۔

سوشل میڈیا پر ایک ویڈیو وائرل ہے جس میں دیکھا جا سکتا ہے کہ کراچی کے وکلاء بھی اشتعال انگیزی پر اتر آئے ہیں۔ویڈیو میں ایک وکیل کہہ رہا ہے کہ سب سے پہلے ڈاکٹروں نے حملہ کیا تھا، وکلاء نے تو صرف جواب دیا ہے، کہیں کا بھی اسپتال ہو ہم نہیں چھوڑیں گے، یہ ملک ڈاکٹرز نے نہیں وکلاء نے بنایا تھا۔

وکیل نے مزید  کہا اب اگر اور ڈاکٹروں، پولیس یا کسی ایجنسی نے کوئی آگے قدم بڑھایا تو پورے پاکستان کے جتنے اسپتال ہیں ہم وہاں گھس کر ڈاکٹروں کو ماریں گے، ہم ان وکلاء کو خوش آمدید کہتے ہیں جنہوں نے ڈاکٹرز اور پولیس والوں کو مارا ہے، وکلاء نے بہت ہی اچھا کیا ہے، ہم وکلاء برادری کے ساتھ ہیں اور ان کی مکمل حمایت کرتے ہیں۔

ایک اور وکیل نے کہا کہ ہم کراچی کے ڈاکٹرز کو بھی نہیں چھوڑیں گے، ڈاکٹرز اگر اپنی حفاظت چاہتے ہیں تو ہم سے معافی مانگیں۔

وکلاء کا کہنا تھا  کہ ہم فی الحال کراچی بار الیکشن میں مصروف ہیں لیکن اگر زیادہ ضرورت پڑی تو ہم  ڈاکٹروں کو جواب دینے کے لیے تیار بیٹھے ہیں،  چاہے وہ جناح اسپتال ہو  یا کراچی کے کسی بھی اسپتال کے ڈاکٹرز ہوں سب کو جوتے مار کر نکالنا چاہیے۔

 

یہ بھی دیکھیں

ایران میں اڑھائی ہزار سے زائد جڑی بوٹیوں کی ادویات کی برآمدات

 تہران:  اسلامی جمہوریہ ایران میں رواں سال کے ابتدائی مہینوں سے اب تک 1600 ٹن …