اتوار , 9 اگست 2020

کربلا میں سکیورٹی کے سخت انتظامات

فارس خبر رساں ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق کربلا کی پولیس کا کہنا ہے کہ کسی بھی ناخوشگوار واقعہ کی روک تھام کیلئے کربلا کے مختلف علاقوں میں سکیورٹی اہلکاروں کو تعینات کیا گیا ہے اور فورسز کا گشت بڑھا دیا گیا ہے۔

کربلا کے عوام نے کربلا کی عدالت کے سامنے گزشتہ روز احتجاجی اجتماع منعقد کر کے شرپسندوں اور تخریب کاروں کی شناسائی اور گرفتاری کا مطالبہ کیا تھا۔

قابل ذکر ہے کہ عراق میں تقریبا دو ماہ سے عراق کےدشمنوں نے معیشتی مشکلات کے خلاف عوام کے پر امن مظاہروں کو اغوا کرکے بدامنی اور بلوے کا بازار گرم کررکھا ہے۔ عراق میں گزشتہ دومہینے میں ایک سو بیس سرکاری اور نجی مراکز کو نذر آتش کردیا گیا جن کا عوام کے مطالبات سے کوئی تعلق نہیں ہے۔

آتشزنی اور بلوے کے واقعات، جو زیادہ تر نقاب پوش افراد انجام دیتے ہیں، اس بات کا ثبوت ہیں کہ بعض قوتیں عراق کو بدامنی اور افراتفری کے حوالے کردینا چاہتی ہیں۔عراق میں تشدد اور بلوے کی نئی لہر میں بھی نقاب پوش افراد ہی بلوا نیز سرکاری اور نجی املاک کو نذرآتش کرتے نظر آتے ہیں۔بلوے کی نئی لہر نے ثابت کردیا ہے کہ بلوائی، بدعنوانی کا خاتمہ یا اصلاحات نہیں بلکہ پورے ملک میں بدامنی اور دہشت گردی پھیلانا چاہتے ہیں۔

یہ بھی دیکھیں

بھارتی وزیر اعظم نے اپنے حلف کی خلاف ورزی کی ہے : اسد الدین اویسی

سری نگر: آل انڈیا مجلس اتحاد المسلمین کے سربراہ اسد الدین اویسی نے کہا ہے …